لال مسجد کی شہداء فاؤنڈیشن نے دہشت گردوں کیخلاف کیاجانیوالا آپریشن ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا

لال مسجد کی شہداء فاؤنڈیشن نے دہشت گردوں کیخلاف کیاجانیوالا آپریشن ہائیکورٹ ...
لال مسجد کی شہداء فاؤنڈیشن نے دہشت گردوں کیخلاف کیاجانیوالا آپریشن ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا

  

سلام آباد (ویب ڈیسک) سانحہ سیہون شریف کے بعد سیکیورٹی فورسز کی جانب سے مبینہ طور پر دہشتگردوں کے خلاف کیا جانے والا آپریشن لال مسجد کی شہداء فاؤنڈیشن نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا ، آئین کے آرٹیکل 199 کے تحت دائر درخواست میں سیکرٹری داخلہ اور سیکرٹری دفاع کو فریق بنایا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق شہداء فاؤنڈیشن آف پاکستان (لال مسجد) نے سکیورٹی فورسز کی جانب سے کی جانے والی کارروائیوں کے خلاف پٹیشن طارق اسد ایڈووکیٹ کے ذریعے دائر کی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ دہشتگردی کی حالیہ لہر کے بعد سیکیورٹی فورسز نے کریک ڈاؤن میں100 دہشت گردوں کو مارنے کا دعویٰ کیا ہے, فریقین کے پاس قانونی تقاضے پورے کیے بغیر کسی کو مارنے کا کوئی حق یا جواز موجود نہیں ، عدالتیں شہریوں کے بنیادی حقوق کی محافظ ہیں اور مارشل لا کے ادوار میں بھی کردار ادا کرتی رہی ہیں۔ ریاست غلط خارجہ پالیسی اور ہمسایوں سے خراب تعلقات کے باعث عوام کے بنیادی حقوق کے تحفظ میں ناکام ہو چکی ہے۔

درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ عدالت فریقین کو دہشت گردوں کے خلاف آپریشن میں مرنے والوں کی فہرست اور پوسٹ مارٹم رپورٹ فراہم کرنے کا حکم دیا جائے اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی تحویل میں غیر قانونی طور پر حراست میں لیے گئے افراد کی فہرست طلب کی جائے۔

مزید :

اسلام آباد -