لشکر اسلام کا خودکش بمبار یاسین قمبرآفریدی پاکستان داخل، وارننگ جاری کردی گئی

لشکر اسلام کا خودکش بمبار یاسین قمبرآفریدی پاکستان داخل، وارننگ جاری کردی ...
لشکر اسلام کا خودکش بمبار یاسین قمبرآفریدی پاکستان داخل، وارننگ جاری کردی گئی

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن)چارسدہ کی تنگی کچہری میں خودکش حملے ناکام بنادیئے گئے ہیں تاہم ان حملوں کو ناکام بنائے جانے کے باوجود پانچ افراد شہید ہوگئے ، حملوں کی ناکامی کی بنیادی وجہ سیکیورٹی فورسز کا الرٹ ہونا تھا، صوبائی حکومت نے ایک دن پہلے ہی متعلقہ اداروں کو خبردار کردیا تھا اور بتایاتھا کہ لشکر اسلام کے خودکش بمبار ’یاسین قمبرآفریدی‘ سمیت جماعت الاحرار نے دودرجن سے زائد دہشتگردوں کو افغانستان سے بھجوادیاہے جوممکنہ طورپر پولیس ، مساجد، حکومتی عمارتوں، آرمی افسران،سکولوں یاہسپتالوں کو نشانہ بناسکتے ہیں۔

روزنامہ پاکستان کو انتہائی باخبرذرائع نے بتایاکہ 20فروری کو ہی صوبائی محکمہ داخلہ کی طرف سے متعلقہ اداروں کو خبردار کیاگیاتھاکہ کالعدم تنظیم جماعت الاحرارکے دودرجن لوگوں کو افغانستان سے پشاور بھجوادیاگیاجبکہ لشکر اسلام نے یاسین قمبرآفریدی نامی ایک بمبار کو بھیجاہے جس کی عمر بائیس تئیس سال ہے۔دودرجن دیگرافراد کے علاوہ جماعت الاحرار نے چکری وارافغانستان سے دوبمباربھی ممکنہ طورپر دہشتگردانہ کارروائیوں کے لیے پاکستان بھیجے ہیں اور ان کا نشانہ پولیس ، مساجد ،سکول ، ہسپتال، حکومتی عمارات اور آرمی آفیسر ہوسکتے ہیں لہٰذا کڑی نگرانی کی جائے اور ایسے کسی بھی واقعے سے بچنے کے لیے ضروری اقدامات کریں۔

ذرائع نے بتایاکہ پشاور،چارسدہ،نوشہرہ،مردان میں افغانستان اور فاٹا سے آنیوالے دہشتگرد باآسانی رسائی حاصل کرسکتے ہیں کیونکہ فاٹا اور مہمند ایجنسی قریب ہے اور بارڈر بھی کھلاہے جس کی وجہ سے دہشتگرد پاکستان میں آسانی سے داخل ہوسکتے ہیں۔

یادرہے کہ آج چارسدہ میں ہونیوالے حملے کی ذمہ داری جماعت الاحرار نے قبول کرلی اوردہشتگردی کی حالیہ لہر کے دوران تاحال کسی ایسے حملے کی ذمہ داری لشکراسلام نے قبول نہیں کی جس کی وجہ سے دہشتگردی کا خدشہ تاحال موجود ہے۔

مزید :

چارسدہ -