پیشی پر آئے ملزم کے رشتہ دار کے ساتھ پولیس اہلکاروں کا غیر انسانی سلوک ،گھسیٹ کرکچہری سے باہر لے گئے

پیشی پر آئے ملزم کے رشتہ دار کے ساتھ پولیس اہلکاروں کا غیر انسانی سلوک ،گھسیٹ ...
پیشی پر آئے ملزم کے رشتہ دار کے ساتھ پولیس اہلکاروں کا غیر انسانی سلوک ،گھسیٹ کرکچہری سے باہر لے گئے

  

لاہور(نامہ نگار )ضلع کچہری میں پیشی پر آئے حراستی ملزم کے رشتہ دار کے ساتھ پولیس اہلکاروں کا غیر انسانی سلوک ، ملزم کو پولیس اہلکار گھسیٹتے ہوئے کچہری سے باہر لے گئے .

لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے انتخابات میں ووٹنگ کے طریقہ کار پر پیدا ہونے والا تنازعہ سلجھ گیا

 پولیس کے مطابق عبدالرحمن حراستی ملزموںکو ہیروئن فراہم کر رہا تھا،ضلع کچہری میں پیشی پر آئے ڈکیتی کے مقدمہ میں ملوث ملزم ضیغم کے رشتہ دار عبدالرحمن نے ملاقات کے لئے اصرار کیا تو پولیس اہلکاروں اور ملزم کے درمیان تلخ کلامی ہو گئی، پولیس اہلکار وں نے پہلے ملزم کو بازوﺅں اور ٹانگوں سے اٹھا یا مگر تھک جانے کے بعد دو پولیس اہلکاروں نے ملزم کے ساتھ غیر انسانی سلوک اختیار کرتے ہوئے گھسیٹنا شروع کر دیا، ملزم عبدالرحمن کو گھسیٹنے سے متعلق جب ضلع کچہری کے جوڈیشل ونگ کے انچارج عبدالرشید سے پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ ملزم بے ہوش ہونے کا ڈرامہ کر رہا تھا اور ملزم پولیس اہلکاروں سے تعاون نہیں کر رہا تھا اس لئے ملزم کو کھینچ کر بخشی خانہ تک لے جایاگیا، انہوں نے مزید کہا کہ جوڈیشل ونگ کے اہلکاروں نے عبدالرحمن کو پیشی پر آئے حراستی ملزموں کو ہیروئن فراہم کرتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کیا تھا جبکہ عبدالرحمن ملاقات کا بے بنیاد بہانہ بنا رہا تھا، انہوں نے مزید کہا کہ عبدالرحمن کے قبضہ سے ایک گرام سے بھی کم ہیروئن برآمد ہوئی جس کی بنیاد پر ملزم کے خلاف مقدمہ بھی درج نہیں ہو سکتا کیونکہ مقدمہ درج کرنے کے لئے کم از کم 5گرام منشیات کا ہونا لازمی ہے، انچارج جوڈیشل ونگ عبدالرشید کا مزید کہنا تھا کہ ملزم عبدالرحمن کی ڈانٹ ڈپٹ کے بعد چھوڑ دیا گیا ۔

مزید :

لاہور -