چغتائی انسٹیٹیوٹ آف پتھالوجی میں علم تشخیص کے حوالے سے سیمینار

چغتائی انسٹیٹیوٹ آف پتھالوجی میں علم تشخیص کے حوالے سے سیمینار

  

لاہور(پ ر) چغتائی انسٹی ٹیوٹ آف پتھالوجی میں’’ پتھالوجی ( علمِ تشخیصِ امراض)میں جدت و ترقی‘‘کے موضوع پر سیمینار کا انعقادکیا گیا ۔ کالج آف فزیشنز اینڈ سرجنز پاکستان کے صدر ڈاکٹر ظفر اللہ چودھری کی زیرِ صدارت منعقدہ سیمینار میں وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر خالد مسعود گوندل، سربراہ لاہور جنرل ہسپتال پروفیسر محمد طیب،وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر عامر زمان،پرنسپل سروسز انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز پروفیسر محمود ایازسمیت مختلف طبی ماہرین نے خطاب کیا۔شرکا ء سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر ظفر اللہ چودھری کا کہنا تھا کہ ماضی میں تشخیص کے لیے آلات و سہولیات نہ ہونے کے سبب ان گنت افراد کی زندگی چلی جاتی تھی۔انہوں نے کہا کہ وقت کے ساتھ ساتھ جہاں بیماریوں کی مختلف شکلیں سامنے آرہی ہیں،وہیں تشخیص کے طریقہ کار میں بھی جدت و ترقی کی ضرورت ہے۔ وائس چانسلر کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر خالد مسعود گوندل نے کہا کہ امراض کی تشخیص کے تمام شعبوں سے وابستہ افرادکو روزمرہ کی پیشہ ورانہ تربیت دینا وقت کی اہم ضرورت ہے۔وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر عامر زمان نے نجی اورسرکاری طبی و تشخیصی اداروں کے مل کرکام کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔ سروسز انسٹی ٹیو ٹ آف میڈیکل سائنسز کے سربراہ پروفیسر محمود ایازنے بتا یا کہ سرکاری اداروں اور ہسپتالوں میں طبی تشخیص کی بہتری کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔سربراہ لاہور جنرل ہسپتال پروفیسر محمد طیب کا کہنا تھا کہ پتھالوجی کے شعبے میں جدت وترقی کے لیے پبلک سیکٹر اداروں میں جہاں نئے شعبہ جات قائم کیے جارہے ہیں۔سیمینار کے میزبان اور چغتائی انسٹی ٹیوٹ آف پتھالوجی کے سربراہ ڈاکٹر اختر سہیل چغتائی نے حاضرین سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو میڈیکل اداروں میں وائرالوجی کے شعبہ جات کے قیام اور وائرالوجی سپیشلسٹ بڑھانے کی طرف توجہ دینی چاہیے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -