لیاقت بلوچ کی قیادت میں جماعت اسلامی کے وفد کا جامعہ عروۃ الوثقیٰ کا دورہ

لیاقت بلوچ کی قیادت میں جماعت اسلامی کے وفد کا جامعہ عروۃ الوثقیٰ کا دورہ

  

لاہور (سٹی رپورٹر) جماعت اسلامی کے وفد نے مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ کی قیادت میں جامعہ عروۃ الوثقیٰ کا دورہ کیا اور تحریک بیداری امت مصطفی کے سربراہ علامہ سید جواد نقوی سے ملاقات میں اتحادامت اور عالم اسلام کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔ دونوں رہنماؤں نے بانی انقلاب اسلامی آیت اللہ روح اللہ امام خمینی ، مولانا جمال الدین افغانی اور جماعت اسلامی کے بانی مولانا ابوالاعلی مودودی کے تصورات اتحاد وحدت پر اتفاق ناگزیر قراردیتے ہوئے اس کے لئے عملی اقدامات کی ضرورت پر زور دیا اور طے پایا کہ اس حوالے سے آئندہ ملاقاتیں جاری رکھی جائیں گی۔ وفد نے حوزہ علمیہ جامعہ عروۃالوثقیٰ کی مسجد بیت العتیق، لائبریری، کمپیوٹر لیب، بعثت ٹی وی چینل کے سٹوڈیوز، 50 بستروں پر مشتمل ہسپتال مفاذالحیات اور طالبات کے مدرسہ جامعہ ام الکتاب کا بھی دورہ کیا ۔جماعت اسلامی کے وفد میں میاں مقصوداحمد، نذیر جنجوعہ، جاوید قصوری، احمد سلمان بلوچ، ساجد انور، مفتی عمر یونس اورمولانا عبیدالرحمن بھی شامل تھے۔

مولانا ناصر عباس کربلائی اور دیگر علماء نے وفد کو جامعہ کے مختلف حصوں کے حوالے سے بریفنگ بھی دی۔

علامہ سید جواد نقوی نے اپنی تصانیف کا تحفہ بھی لیاقت بلوچ کو پیش کیا ۔جبکہ جماعت اسلامی کے رہنماوں نے مولانا مودودی کی گرانقد ر کتابین تفہیم القرآن اور تفہیم الحدیث بطور ہدیہ تحریک بیداری امت مصطفی کے سربراہ کو پیش کیں۔رہنماوں نے زور دیا کہ امام خمینی،مولانا مودودی اور مولانا جمال الدین افغانی کی تعلیمات پر اتحاد تشکیل پا سکتا ہے۔ علامہ جواد نقوی نے واضح کیا کہ کسی بھی نظریہ اور مکتب کو سمجھنے کے لئے اس کی اصل کی طرف رجوع کرنے کی ضرورت ہے۔ تشیع کے بارے میں جو غلط فہمیاں پائی جاتی ہیں ،اس کی وجہ جہالت ہے۔ انہوں نے کہا کہ رہبر معظم آیت اللہ خامنہ ای کا مقدسات اہل سنت اور ازواج مطہرات کی حرمت کے حوالے سے فتویٰ تو ابھی کی بات ہے، کسی مذہب کے مقدسات کو بر ا کہنا مکتب اہلبیت میں کبھی بھی جائز نہیں رہا۔ انہوں نے کہا ہے کہ داعش کو دیکھنے سے اسلام کو نہیں سمجھا جاسکتا ،اس کے لئے قرآنی تعلیمات اور سنت نبوی ہیں۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ اتحاد امت وقت کی ضرورت ہے اور ہم اتحاد کو تشکیل دے کر بڑی قوت بن سکتے ہیں۔ جماعت اسلامی نے فرقہ واریت کے خاتمے کے لئے بنیادی کردار ادا کیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -