سٹیٹ بنک اورلمز میں بنکنگ قوانین کے شعبہ میں چیئر کے قیام کا سمجھوتہ

سٹیٹ بنک اورلمز میں بنکنگ قوانین کے شعبہ میں چیئر کے قیام کا سمجھوتہ

  

لاہور(پ ر)سٹیٹ بنک ور لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز (لمز) کے درمیان لمز کے شیخ احمد حسن سکول آف لاء (ایس اے ایچ ایس او ایل) میں بنکنگ قوانین کے شعبہ میں ایس بی پی چیئر کے قیام کے لئے مفاہمت کا سمجھوتہ طے پا گیا۔ اس سلسلے میں ایم او یو پر سٹیٹ بنک کے گورنر طارق باجوہ اور وائس چانسلر لمز ڈاکٹر ارشد احمد نے 18 فروری کو ایک ایم او یو پر دستخط کئے۔سٹیٹ بنک 2001 سے اپنے آؤٹ ریچ پروگرام کے زریعے بنکنگ شعبہ کے تعلیمی پہلوؤں کو ریگولیٹ کرنے کے لئے سرکاری شعبہ کی جامعات کے ساتھ تعاون کر رہا ہے جبکہ لمز نجی شعبہ کی پہلی یونیورسٹی ہے جسے سٹیٹ بنک کی جانب سے ایسے تعاون کے لئے منتخب کیا گیا ہے۔منعقدہ تقریب میں لمز کے بانی اور پیٹرن سید بابر علی، لمز بورڈ آف ٹرسٹیز کے ممبران ڈاکٹر پرویز حسن اور صائمہ خواجہ، ریکٹر لمز شاہد حسین، قائمقام ڈین ایس اے ایچ ایس او ایل ڈاکٹر کامران اصدر اور معروف قانون دان حسن عرفان بھی شریک تھے۔ گورنر سٹیٹ بنک طارق باجوہ نے لمز کے لئے بھرپور تعاون و حمایت کا اظہار کیا اور کہا کہ ہم ایک تعلیمی لیڈر کے ساتھ یہ ایم او یو کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لمز بہترین وکیل تیار کر رہی ہے، اگر ہم انہیں بہتر تربیت، ضروری ہنر اور درست تعلیمی بنیاد فراہم کریں تو مجھے یقین ہے کہ وہ ملک کے قانونی منظرنامے میں انتہائی مثبت کردار ادار کریں گے۔

لمز تدریس و تحقیق میں ایکسلینس کے لئے کوشاں ہے اور اس اقدام سے بنکنگ قوانین کے شعبہ میں ترقی پسند سمت کی راہ متعین کرے گا۔

ڈاکٹر ارشد احمد نے کہا کہ ہم اس حوالے سے پراعتماد ہیں کہ یہ چیئر ایسا تحقیقی پروگرام تشکیل دے گی جو معاشرے کے لئے مفید ثابت ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ اس نئی چیئر کا قیام ہمارے لاء سکول کے لئے ایک بہت بڑا اعزاز ہے اور ہماری یونیورسٹی کو سٹیٹ بنک آف پاکستان کے ساتھ اپنی شراکت داری پر فخر ہے۔

مزید :

کامرس -