شہروں میں بارش ، پہاڑوں پر برفباری ، لینڈ سلائیڈنگ ، راستے بند ، چھتیں گرنے سے 5جاں بحق

شہروں میں بارش ، پہاڑوں پر برفباری ، لینڈ سلائیڈنگ ، راستے بند ، چھتیں گرنے ...

  

لاہور،اسلام آباد،مظفر آباد،گلگت ،کراچی ،کوئٹہ، ملتان(سٹاف رپورٹرز،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) لاہور، وفاقی دارالحکومت اسلام آباد ، جڑواں شہر راولپنڈی ، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان، بلوچستان ، سندھ اور خیبر پختونخوا میں بارش اور پہاڑوں پر برف باعث کے سردی کی شد ت میں مزید اضافہ ہوگیا، چھتیں گرنے کے واقعات سے خواتین سمیت 5افراد جاں بحق متعددزخمی ہو گئے۔ 26 فروری سے بلوچستان کے شمال میں بارشوں کا نیا سسٹم داخل ہونے کا امکان ہے ۔تفصیلات کے مطابق کوئٹہ، پشاور، سکھر، راجن پور سمیت ملک کے دیگر شہروں میں کہیں ہلکی اور کہیں موسلا دھار بارش ہوئی جس کے بعد موسم مزید سرد ہوگیا، بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا ۔محکمہ موسمیات نے مالاکنڈ، ہزارہ، ڈویژن، گلگت بلتستان اور کشمیر میں موسلا دھار بارش کے باعث لینڈ سلائیڈنگ ،بلوچستان اور ڈیرہ غازی خان کے ندی نالوں میں طغیانی کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔محکمہ موسمیات کی جانب سے کراچی میں بھی کہیں ہلکی اور کہیں گرج چمک کے ساتھ تیز بارش کی پیشگوئی کی گئی ہے۔وادی کوئٹہ اور گرد و نواح میں گزشتہ رات سے وقفے وقفے سے ہلکی بارش ہوتی رہی، مستونگ، پشین، خضدار، قلات، مسلم باغ، زیارت، قلات، مکران، نصیرآباد، ڑوب ڈویژن سمیت شمالی بلوچستان کے بیشتر علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ بارش ہوئی۔ضلع چمن بھر میں گزشتہ رات سے موسلا دھار بارش اور پہاڑوں پر برفباری جاری رہی جس کے باعث انسداد پولیو اور حفاظتی ٹیکہ جات مہم (آج) جمعرات تک ملتوی کردی گئی۔پنجگور اور گرد و نواح میں بھی رات سے وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری رہا، محکمہ موسمیات نے 26 فروری سے بلوچستان کے شمال میں بارشوں کا نیا سسٹم داخل ہونے کا امکان ظاہر کیا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق نئے سسٹم کے تحت کوئٹہ سمیت بلوچستان کے شمال میں مزید بارشوں کا امکان ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران بلوچستان میں سب سے زیادہ بارش پسنی میں 25 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی، زیارت میں 8، پنجگور میں 5، دالبندین، قلات، خضدار اور سبی میں 4، 4، کوئٹہ اور گوادر میں 3 ملی میٹر اور بارکھان میں 2 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔پشاور اور گردونواح میں وقفے وقفے سے بارش کے بعد سردی بڑھ گئی ، محکمہ موسمیات کے مطابق پشاور 16 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی اور کم سے کم درجہ حرارت 9 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیااسی طرح بنوں میں 12، چراٹ میں 9، اپر دیر اور کاکول میں 7،7 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی، مالم جبہ اور لوئر دیر میں 5،5، چترال اور پٹن میں 4،4 ملی میٹر، پارا چنار، سیدو شریف اور بالاکوٹ میں 3، 3 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔سکھر اور گرد و نواح میں رات سے وقفے وقفے سے ہلکی بارش ہوئی جس کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا، شہر میں بارش کے باعث سیپکو کے 100 سے زائد فیڈرز ٹرپ کر گئے۔پرانا سکھر، جناح چوک، نیوپنڈ، مینارہ روڈ اور دیگر علاقوں میں بجلی کی سپلائی معطل ہوگئی، ذرائع سیپکو کے مطابق بارش رکنے پر فیڈرز کی بحالی کا کام شروع کیا جائیگا۔جیکب آباد، کندھ کوٹ اور کشمور و گرد و نواح میں وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری رہاپنجاب کے شہر راجن پور اور گرد و نواح میں بھی بارش ہوئی جس کی وجہ سے سردی بڑھ گئی ،سرگودھا اور اوچ شریف و گرد و نواح میں بھی گہرے کالے بادل خوب جم کر برسے جس کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا ، بارش کے باعث ملتان اور ہنگو میں چھتیں گرنے سے خاتون سمیت ۵ افراد جان سے گئے،ملتان میں مرنیوالوں کا تعلق ایک ہی خاندان سے ہے۔

بارش

مزید :

صفحہ اول -