کیمپ جیل کے قیدیوں کو قانون کے مطابق طبی سہولیات دی جائے،لاہورہائیکورٹ

کیمپ جیل کے قیدیوں کو قانون کے مطابق طبی سہولیات دی جائے،لاہورہائیکورٹ

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے کیمپ جیل کے قیدی کو قانون کے مطابق طبی سہولیات فراہم کرنے کا حکم دے دیا ۔اس کیس کی سماعت کرتے ہوئے جسٹس ملک شہزاد احمد خان نے ریمارکس دئیے کہ انسانی زندگی کا معاملہ ہے نظر انداز نہیں کر سکتے ۔عدالت عالیہ کے ڈویژن بنچ نے کیمپ جیل کے قیدی شاہد حسن اعوان کی درخواست پر سماعت کی جس میں قیدی کو جیل میں طبعی سہولیات فراہم نہ کرنے کے اقدام کو چیلنج کیا گیا تھا، عدالتی حکم پر سپرنٹنڈنٹ کیمپ جیل عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ میڈیکل بورڈ نے سروسز ہسپتال میں قیدی شاہد حسن اعوان کا معائنہ کرنا ہے جس کے بعد قیدی کو قانون کے مطابق طبی سہولیات فراہم کی جائیں گی جس پر بنچ کے سربراہ جسٹس ملک شہزاد احمد نے سپرنٹنڈنٹ سے استفسار کیا کہ یہ انسانی زندگی کا معاملہ ہے ،میڈیکل کی سہولیات کیوں نہیں دی جارہی ہیں عدالت نے سپرنٹنڈنٹ کیمپ جیل کو حکم دیا کہ قانون کے مطابق قیدی کو میڈیکل کی سہولت دی جائیں عدالت نے آئندہ سماعت پر عملدرآمد رپورٹ طلب کر لی درخواستگزار وکیل نے موقف اختیار کیا کہ شاہد حسن اعوان سات سال سے جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہے، نیب کورٹ سے قیدی کو 14 سال کی سزا سنائی تھی وکیل نے بتایا کہ قیدی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہے جسے جیل میں میڈیکل کی سہولت نہیں دی جا رہیں ،عدالت سے استدعا کی گئی کہ قیدی کو جیل میں طبعی سہولیات فراہم کرنے کا حکم دیا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -