اپوزیشن کو گرفتار یو پر جمہوریت یا د آجاتی ہے، احتساب پر سمجھوتہ نہیں ہو گا ، معاشی بحران سے نکل رہے ہیں: عمران خان

اپوزیشن کو گرفتار یو پر جمہوریت یا د آجاتی ہے، احتساب پر سمجھوتہ نہیں ہو گا ، ...

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اپوزیشن کو گرفتاریوں پر جمہوریت یاد آ جاتی ہے، یہ سارے چوری کرکے گرفتاری کے بعد منڈیلا بن جاتے ہیں،جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ پاکستان کو جلد ترقی کی راہ پر گامزن کریں گے۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے زیر صدارت تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا جس میں ملک کی سیاسی صورتحال سمیت مختلف امور پر غور کیا گیا۔اجلاس میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان کا جائزہ لیا گیا جبکہ وزیراعظم نے پلوامہ واقعے کے بعد کی صورتحال پر پارلیمانی پارٹی کو اعتماد میں لیا۔وزیر خزانہ اسد عمر کی جانب سے سعودی عرب کے ساتھ ہونے والی مفاہمتی یاداشتوں پر بریفنگ دی گئی۔ اجلاس میں تحریک انصاف اور اتحادی جماعتوں کے ارکان قومی اسمبلی اور وفاقی کابینہ کے اراکین نے بھی شرکت کی۔وزیراعظم عمران خان کا پارلیمانی پارٹی سے خطاب میں کہنا تھا کہ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا دورہ پاکستان کامیاب رہا ہے۔ پاکستان معاشی بحران سے کامیابی سے نکل رہا ہے۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے دو ٹوک موقف اختیار کرتے ہوئے واضح کیا کہ احتساب کے آڑے کسی کو نہیں آنے دیں گے اور نہ ہی اس پر کوئی سمجھوتا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو گرفتاریوں پر جمہوریت یاد آ جاتی ہے لیکن جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ ہماری حکومت پاکستان کو جلد ترقی کی راہ پر گامزن کرے گی۔وزیراعظم نے ہدایت دی کہ حکومت کی کارکردگی کو اجاگر کرنے کی ضرورت ہے۔ پی ٹی آئی کی حکومت عام آدمی کی زندگی میں انقلاب لائے گی ۔دوسری جانب اقوام متحدہ نے پاکستان میں کامیاب جوان پروگرام کیلئے30ملین ڈالرز فنڈز کا اعلان کرتے ہوئے عثمان ڈار کو پروگرام کا کو چیئر مین مقرر کر دیا ہے ۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سے معاون خصوصی عثمان ڈار اور اقوام متحدہ حکام نے ملاقات کی۔ اس موقع پر اقوام متحدہ کی جانب سے پاکستانی نوجوانوں کیلئے 30 ملین ڈالر فنڈز فراہم کرنے کا اعلان کیا گیا۔ملاقات میں پاکستانی نوجوانوں کی فلاح و بہبود کے لیے مختلف منصوبے شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔اقوام متحدہ حکام نے کہا کہ کامیاب جوان پروگرام کے لیے 30 ملین ڈالر مختص کردئیے گئے۔ منصوبے کے تحت 2 لاکھ نوجوانوں کو با اختیار بنایا جائے گا۔حکام کے مطابق حکومت پاکستان کے ساتھ مل کر نوجوانوں کی ترقی کے لیے کام کریں گے، حکومتی سطح پر نوجوانوں کی سرپرستی بہتر اقدام ہے۔اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ فنڈز فراہم کرنے پر اقوام متحدہ کے شکر گزار ہیں، پاکستانی نوجوانوں میں بے پناہ ٹیلنٹ اور صلاحیت موجود ہے۔ چاہتے ہیں نوجوانوں کو ملکی ترقی میں موثر کردار ادا کرنے کا موقع دیں۔

وزیراعظم

اسلام آباد،پشاور(نیوزایجنسیاں)برطانوی رکن پارلیمنٹ سعیدہ وارثی نے وفد کے ہمراہ وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی وفد میں ناز شاہ، لارڈ روگن، فیصل رشید اور جان ڈیوس شامل تھے ۔معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانیز ذولفی بخاری بھی ملاقات میں موجود تھے وزیر اعظم نے وفد کو مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں بارے آگاہ کیا۔دوسری طرف وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے قومی اسمبلی کے چیمبر میں وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی وزیراعلیٰ نے ضم شدہ قبائلی اضلاع میں ترقیاتی اور خدمات کی سرگرمیوں کے حوالے سے وزیراعظم کو آگاہ کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ قبائل کی تیز تر ترقی او ر ضم شدہ اضلاع میں انفراسٹرکچر بہتر بنانے پر کام کر ہے ہیں۔ بہتر امن و امان کی وجہ سے قبائلی اضلاع کی عوام کی مشاورت سے ترقیاتی پلان کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں۔ محمود خان نے واضح کیا کہ سابق فاٹا میں سرکاری دفاترکے قیام ، وزراء کے دوروں اور سرکاری اہلکاروں کے کام کی وہ خود مانیٹرنگ کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کے نوجوانوں کو قرضہ دینگے تاکہ وہ اپنا روزگار شروع کر سکیں اور معاشی اعتبار سے اپنے پاؤ ں پر کھڑا ہو سکیں۔نئے شامل ہونے والے اضلاع کی آباد کاری و تعمیر نو ، معاشی سرگرمیوں کا اجراء اور روزگار کی فراہمی اور ترقیاتی سرگرمیوں کا آغاز چیلنج ہے تا ہم وزیراعظم کے ویژن اور رہنمائی میں تمام چیلنجز پر قابو پا لینگے ۔وزیراعظم نے انکشاف کیا کہ صوبے میں نئے شامل ہونے والے اضلاع کو ترقیاتی پیکیج دے رہے ہیں،صوبائی وزراء سابقہ فاٹا کے دورے جاری رکھیں اور اپنے محکموں کی توسیع اور استحکام پر کام کریں وزیراعظم نے صوبے کے تمام اضلاع میں ترقیاتی اور تعمیر نو کی سرگرمیوں کا آغاز اور مانیٹرنگ کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ معاشی سرگرمیاں شروع کرینگے اور قبائلی نوجوانوں کو روزگار دینگے۔ عمران خان نے واضح کیا کہ انہیں قبائلی اضلاع کے لوگوں کی تکالیف کا احساس ہے۔وعدے پورے کرینگے۔ نئے اضلاع میں صحت انصاف کارڈ سب کو ملے گا۔غریب کی فلاح ترجیح ہے ،کسی کا استحصال نہیں ہونے دینگے۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان نے برطانوی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈی ایف آئی ڈی) کے بالخصوص تعلیم اور ہنرمندی کے فروغ کیلئے کردار کو سراہتے ہوئے اس ضمن میں ادارہ کے ساتھ شراکت داری کو مزید تقویت دینے پر زور دیا ہے جو ملک کے نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی کیلئے اشد ضروری ہے۔ انہوں نے یہ بات برطانوی وزیر مملکت برائے بین الاقوامی ترقی اور بہبود خواتین پینی مور دانت سے گفتگو کرتے ہوئے کہی جنہوں نے بدھ کو ان سے ملاقات کی۔ وزیر مملکت کی خصوصی مشیر لین ڈیوڈ سن، پاکستان میں برطانوی ہائی کمشنر تھامس ڈریو، ڈی ایف آئی ڈی پاکستان کی سربراہ جونا ریت اور دیگر حکام بھی ان کے ہمراہ تھے۔ چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ ہارون شریف، وزیراعظم کے معاون خصوصی نعیم الحق، سیکرٹری داخلہ اور دیگر بھی ملاقات میں شریک تھے۔ وزیراعظم نے بالخصوص تعلیمی شعبہ اور پیشہ ورانہ ترقی کے شعبہ میں پاکستان کے ساتھ مسلسل وابستگی پر ڈی ایف آئی ڈی کی تعریف کی۔ انہوں نے پیشہ ورانہ ترقی میں شراکت داری کو مزید مضبوط بنانے پر زور دیا جو ملک کے نوجوانوں کے روزگار کے لئے بہت اہم ہے۔ ملاقات کے دوران علاقائی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال ہوا۔

عمران خان

Back to Conversion

مزید :

صفحہ اول -