پشاور فوڈ اتھارٹی کا فلور ملز کیخلاف کریک ڈاؤن کا آغاز ، 3فلور ملز سیل

پشاور فوڈ اتھارٹی کا فلور ملز کیخلاف کریک ڈاؤن کا آغاز ، 3فلور ملز سیل

  

پشاور (سٹی رپورٹر) خیبرپختونخوا فوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ اتھارٹی نے فلور ملز کیخلاف کاروائی کرتے ہوئے چارسدہ روڈ پر واقع تین فلور ملوں کو سیل کردیا۔ تینوں فلور ملوں میں صفائی کی ابتر صورتحال تھی جبکہ تینوں فلور ملز کراچی، اسلام اباد اور لاہور میں واقع ملوں کے نام آٹا بناتے تھے۔ ملز فوڈ اتھارٹی سٹینڈرڈز کے مطابق فوڈ فورٹیفیکیشن بھی نہیں کرتے تھے۔ ڈائریکٹر جنرل کے پی فوڈ اتھارٹی ریاض خان محسود نے یہاں سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ فلور ملز مالکان کو پہلے متنبہہ کیا گیا ہے اور فوڈ فورٹیفیکیشن غذا کا اہم جز اور ہر مل میں اسکا ہونا ناگزیر ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ تمام ملز مالکان فوڈ فورٹیفیکیشن پروگرام شروع کریں اور اس مد میں تکنیکی معاونت فوڈاتھارٹی فراہم کریگی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ مخفی غذائی کمی کو مدنظر رکھتے ہوئے فوڈ اتھارٹی نے فوڈ فورٹیفیکیشن پروگرام کا آغاز کیا ہے جسکے تحت ابتدائی طور پر فلور ملوں کو مائیکرو فیڈر اور اس کیلئے مجوزہ غذائی اجناس بھی فلور ملوں کو مہیا کی جارہی ہیں۔کریک ڈاون کی تفصیلات بیان کرتے ہوئے اسسٹنٹ ڈائریکٹر فوڈ سیفٹی سائرہ نثار کا کہنا تھا کہ تینوں ملوں میں صفائی کی ابتر صورتحال تھی جو کہ کسی صورت قابل قبول نہیں جبکہ اسلام آباد، کراچی اور لاہور میں واقع فلور ملوں کے نام سے پشاور میں آٹا بنانا بھی غیر قانونی ہے اور مس برانڈنگ کے زمرے میں آتاہے جس کی وجہ سے ملوں کو سیل کردیا گیا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ملز کے پی فوڈ اتھارٹی کی جانب سے شروع کردہ فوڈ فورٹیفیکیشن پر بھی عمل پیرا نہیں تھیں جسکی وجہ سے مارکیٹ میں جانے والا آٹا انسانی غذائی ضروریات کو پورا نہیں کرتا۔ اپریشن بارے ان کا کہنا تھاکہ تمام فلور ملوں کو روزانہ کی بنیاد پر چیک کیا جائے گا اور مندرجہ بالا صورتحال میں ملز کو تالے لگائے جائینگے جبکہ بروقت فوڈ فورٹیفیکیشن پروگرام شروع کرنے پر ملوں کو تعارفی اسناد سے بھی نوازا جائے گا۔

مزید :

صفحہ اول -