اسلام آباد:سپریم کورٹ،پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی درخواست مسترد

اسلام آباد:سپریم کورٹ،پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی ...
اسلام آباد:سپریم کورٹ،پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی درخواست مسترد

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی درخواست مسترد کردی۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی درخواست پرسماعت کی۔

پاک ترک سکول کی جانب سے وکیل بابر ستار پیش ہوئے ،انہوں نے عدالت میں نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کیلئے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ پہلے وکیل وقت کی کمی کے باعث تیاری نہ کرسکے، ہائیکورٹ میں بھی یہ کیس میں نے کیا تھا۔

جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ پہلا وکیل نالائق تھا،یہ کوئی دلیل نہیں،آپ کی وجہ سے قانون تبدیل نہیں کرسکتے۔

وکیل بابر ستار نے کہا کہ 13 دسمبر کو کیس سنا ہی نہیں گیا،جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ اب آپ بنچ پر الزام لگا رہے ہیں،جسٹس عظمت سعیدجب سرداراعجازصاحب آئیں گے پھردیکھیں گے کہ کیاکرنا ہے،

عدالت نے پاک ترک سکول کی جانب سے نظرثانی کیس میں وکیل تبدیلی کی درخواست مسترد کرتے ہوئے کہاکہ درخواست میں وکیل تبدیل کرنے کی معقول وجہ نہیں لکھی گئی۔

واضح رہے کہ پاک ترک سکول کی جانب سے پہلے سرداراعجازاسحاق بطور وکیل پیش ہوئے تھے

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -