’’حیران ہوں کہ نیب نے مجھے تب ہی گرفتار کیوں کیا جب ۔۔۔‘‘ پنجاب اسمبلی میں سابق صوبائی وزیر عبد العلیم خان قومی احتساب بیورو کے خلاف پھٹ پڑے

’’حیران ہوں کہ نیب نے مجھے تب ہی گرفتار کیوں کیا جب ۔۔۔‘‘ پنجاب اسمبلی میں ...
’’حیران ہوں کہ نیب نے مجھے تب ہی گرفتار کیوں کیا جب ۔۔۔‘‘ پنجاب اسمبلی میں سابق صوبائی وزیر عبد العلیم خان قومی احتساب بیورو کے خلاف پھٹ پڑے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق سینئر وزیر پنجاب عبد العلیم خان نے کہا ہے کہ میں حیران ہوں کہ نیب نے مجھے تب ہی کیوں گرفتار کیا جب میں ایم پی اے بن گیا؟اللہ رب العزت کو گواہ بنا کر کہتا ہوں کہ  میں نے کسی بھی قسم کی بے ایمانی اور کرپشن نہیں کی بلکہ پوری ایمانداری سے عوام کی خدمت کرنے کی کوشش کی ہے۔

پنجاب اسمبلی  میں خطاب کرتے ہوئے عبد العلیم خان کا کہنا تھا کہ میں پوری ایمانداری سے کہتا ہوں کہ میں نے بطور ایم پی اے یا بطور صوبائی وزیر کوشش کی کہ میں اپنے ملک کیلیے نیک جذبے کے ساتھ محنت کر سکوں، اس ایوان کے ممبر جو اپوزیشن میں بھی ہیں سب گواہ ہیں اور کوئی ایک شخص بھی کہہ دے کہ میں نے کبھی اپنے اختیارات کا ناجائز فائدہ اٹھایا ہو؟اپنے آپ کو فائدہ پہچانے کیلیے اپنے عہدے کا استعمال کیا ہو؟کبھی کسی ٹھیکے میں یا نوکری دیتے ہوئے ایک روپے کی ہیرا پھیری کی ہو لیکن آج نیب کی سلاخوں کے پیچھے ہوں تو نہائت افسوس ہے۔انہوں نے کہا کہ جب سے ایم پی اے بنا ہوں تب سے 5 بار نیب نے طلب کیا اور میں پیش ہوا، نیب نے میری دی ہوئی دستاویزات سے ہی مجھے ملزم بنا کر گرفتار کر لیا۔انہوں نے کہا کہ ایم پی اے بنا تو ہر تین دن کے بعد نوٹس آجاتا تھا، نیب کو جو کاغذات دیتا تھا، ان میں سے ہی اگلی دفعہ میرے کیخلاف چیزیں نکال لیتے تھے۔علیم خان نے اللہ رب العزت کو گواہ بنا کر کہا کہ میں نے کسی بھی قسم کی بے ایمانی اور کرپشن نہیں کی بلکہ پوری ایمانداری سے عوام کی خدمت کرنے کی کوشش کی،پاکستان کو اپنے گھر سے زیادہ اہم سمجھا ہے، نئے پاکستان اور اپنے قائد عمران خان کے لیے کبھی پیچھے نہیں ہٹا ، میری نیت صاف ہے اور میری وجہ سے پنجاب اسمبلی جیسے معزز ایوان کا سر نہیں جھکے گا۔

واضح رہے کہ سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی کی جانب سے پروڈکشن آرڈر جاری ہونے پر گذشتہ روز بھی عبد العلیم خان نے پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کی تھی اور آج بھی نیب کی ٹیم سابق صوبائی وزیر کو لے کر پنجاب اسمبلی پہنچی جہاں انہوں نے نہ صرف اجلاس میں شرکت کی بلکہ سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی ،صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت،چوہدری ظہیر الدین سمیت پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی سے بھی ملاقاتیں کیں اور ملکی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ 

مزید :

قومی -