جھوٹی گواہی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے:صدر سپریم کورٹ بار

جھوٹی گواہی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے:صدر سپریم کورٹ بار
جھوٹی گواہی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے:صدر سپریم کورٹ بار

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) صدر سپریم کورٹ بار امان اللہ کنرانی نے کہاہے کہ جھوٹی گواہی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے بلکہ بڑا مسئلہ یہ ہے کہ جرائم کو ختم کرنے کا میکنزم بنانا چاہئے ۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک “ میں گفتگو کرتے ہوئے صدر سپریم کور ٹ بار امان اللہ کنرانی نے کہاہے کہ جھوٹی گواہی اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہے بلکہ بڑا مسئلہ یہ ہے کہ جرائم کو ختم کرنے کا میکنزم بنانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ بڑامسئلہ مظلوم کوانصاف دیناہے ، ہم مظلوم کو انصاف دینے کی بجائے ظالم کوراستے دینے کی بات کررہے ہیں، میں اس چیزکا مخالف ہوں ۔

انہوں نے کہا کہ میں نے قبائلی نظام دیکھاہے کہ نواب اکبر بگٹی کے سامنے جب کوئی ملزم آتا تھا تو وہ سچ بولتا تھا چاہے باہر وہ جھوٹ بھی بولتاہو، یہ ایک معیار ہے جوقائم کیا جاتاہے ۔ انہوںنے کہا کہ نواب اکبربگٹی کے قتل کی ذمہ دارریاست ہے ، یہ ایک آدمی کاقتل نہیں ہوا بلکہ کئی اور لوگ بھی قتل ہوئے ہیں ، یہ ایک نظام ہے جس کو ختم کیا جانا چاہئے تاکہ آئندہ ہمارے ملک میں کوئی ایسا واقعہ نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ ازخود نوٹس کااختیار انصاف کی فراہمی کا ذریعہ ہے اور ایک حفاظتی دیوار ہے ، اگر اس کوختم کردیاگیا تو اس کامطلب یہ ہے کہ شکار کو کتوں کے آگے چھوڑ دیا جائے ، پھر کوئی داد رسی کیلئے نہیں آئے گا ، البتہ اس کو وہاں استعمال کرناچاہئے جہاں ضرورت ہو۔

مزید :

قومی -