”جج صاحبان پہلے ہی فیصلہ کرلیتے ہیں کہ ۔۔۔ “ رشید اے رضوی نے ججز تقرری پر بڑا سوال اٹھا دیا

”جج صاحبان پہلے ہی فیصلہ کرلیتے ہیں کہ ۔۔۔ “ رشید اے رضوی نے ججز تقرری پر بڑا ...
”جج صاحبان پہلے ہی فیصلہ کرلیتے ہیں کہ ۔۔۔ “ رشید اے رضوی نے ججز تقرری پر بڑا سوال اٹھا دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) قانون دان رشید اے رضوی نے کہاہے کہ جوڈیشل کمیشن میں ججز پہلے سے فیصلہ کرکے آجاتے ہیں کہ کس کا تقرر کرنا ہے ؟ پارلیمنٹ کی کمیٹی زیرو ہوگئی ہے۔

جیونیوز کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“ میں گفتگو کرتے ہوئے رشید اے رضوی نے کہا کہ جھوٹ ہمارے معاشرے میں اتنا عام ہوگیاہے کہ مغربی معاشرے کے مقابلے میں یہ کام کرنا کوئی بڑی بات نہیں سمجھتی جاتی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ جھوٹی گواہی کی بہت سے وجوہات ہیں، سول مقدمات تو بنتے ہی جھوٹ کی بنیاد پر ہیں، ہماراکلچر اور سیٹ اپ جھوٹ کی حوصلہ شکنی نہیں کرتا جب تک اس کے خلاف سختی سے کارروائی نہیں کی جاتی تو جھوٹے مقدمات بنتے رہیں گے اورجھوٹی گواہیاں آتی رہیں گی ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان بار کونسل کی یہ بہت پرانامطالبہ تھا کہ جوڈیشل کمیشن بنا کر ججوں کی تقرریاں کی جائیں ، جوڈیشل کمیشن بنایا گیا اور اس کے ساتھ پارلیمانی کمیٹی بھی بنادی گئی، اب سپریم کورٹ کے ایسے فیصلے آئے ہیں کہ پارلیمنٹ کی کمیٹی زیرو ہوگئی ہے ، جوڈیشل کمیشن میں اکثریت ججوں کی ہے ، وہ پہلے سے فیصلہ کرکے آجاتے ہیں کہ کس کا تقرر کرنا ہے؟ ، اس لئے اب وقت آگیاہے کہ ایک ایسا جوڈیشل کمیشن ہو جس میں پارلیمنٹ کے ارکان بھی ممبر ہوں ۔

مزید :

قومی -