وفاق نے خیبر پختونخوا کے بجلی منافع کے 128بلین روپے دبار کھے ہیں، زاہد خان

وفاق نے خیبر پختونخوا کے بجلی منافع کے 128بلین روپے دبار کھے ہیں، زاہد خان

  



تیمرگرہ(بیورورپورٹ) اے این پی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات وسابق سنیٹر زاہد خان نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت نے خیبر پختون خواہ کے بجلی منافع کے 128بلین روپے دبا کر رکھے ہے,پختونوں کے حقوق کے لئے عوامی نیشنل پارٹی نے اسفندیار ولی خان کی قیادت میں دس مارچ کو پشاور میں اے پی سی بلائی ہے،سول نافرمانی کی تحریک چلانے والے آج مولانا فضل الرحمٰن بغاوت کا الزام لگارہے ہیں ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنی رہائیش گا ہ اوڈیگرام لوئر دیر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں افراتفری اور غیر یقینی صورتحال ہے معیشت تباہ حال ہے اور مہنگائی میں غریب عوام کا جینا حرام کر دیا ہے اور عمران خان اور ان کی ٹیم سے حکومت چلایا نہیں جاسکتا جبکہ عمران خان کو سلیکٹ کرنے والے سلیکٹر بھی حکومت کی کارکردگی سے مایوس ہے انہوں نے کہا کہ معیشت تباہ کرنے اور ملک میں مہنگائی کا سونامی لانے میں صرف وزیر قصور وار نہیں بلکہ اس میں وزیر اعظم عمران خان برابر شریک ہے انہوں نے کہا کہ اس وقت ملک میں سیاسی عدم استحکام ہے وزیر اعظم کے ارد گرد کرپٹ لوگ جمع ہے جبکہ حکومت سیاسی مخالفین کو نیب کے ذریعے انتقام کا نشانہ بنا رہے ہے انہوں نے کہا کہ جہانگیر ترین اور پرویز خٹک ودیگر جو مالم جبہ بی ار ٹی اور سونامی بلین ٹری کے کرپشن میں ملوث ہے کا بھی احتساب ہونا چاہے اگر حکومت کرپشن کے خاتمہ میں مخلص ہے تو کراس دی بورڈ احتساب کیا جائے انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے خیبر پختون خواہ حکومت اور پختونوں کی بجلی کی مد میں 128بلین روپے منافع غصب کیا ہے عوامی نیشنل پارٹی پختونوں کے حقوق کے حصول کے لئے دس مارچ کو پشاور میں پختون سیاسی قیادت کا اے پی سی بلایا ہے سنیٹر زاہد خان نے کہا کہ عمران خان کا مولانا فضل الرحمن کے خلاف ارٹیکل 6کے تحت مقدمہ چلانا مضحکہ خیز کیونکہ عمران خان نے خود ہی سول نا فرمانی کی تحریک چلانے اور پی ٹی وی پر حملہ کرنے میں ملوث ہے مولانا فضل الرحمن سے پہلے عمران خان کے خلاف کاروائی ہونی چاہے انہوں نے کہا کہ عمران خان اپنے اپ کو فارن فنڈنگ کیس سے خود کو بچا رہے ہے انہوں نے کہا کہ جنرل پرویز مشرف کو عدالتی سزا سے بچانے کے لئے حکومت سرگرم ہے انہوں نے کہا کہ موجود ہ حکومت نا اہل ہے اور عوام کو جتنا جلد اس سے جان چھڑئی جائے ملک کے بہتر مفاد میں ہے انہوں نے کہا کہ ملک کے مسائل کا واحد حل دوبارہ شفاف انتخابات کرانے میں ہے سنیٹر زاہد خان نے کہا کہ دہشتگری کے دوران محسود قبائل کے مکانات تباہ ہوگئے تھے لیکن ابھی تک حکومت انہیں معاوضہ نہ دے سکی اور جب مسعود قبائل اپنے حقوق کے لئے اواز اٹھاتے ہے تو انہیں غدار قرار دئے جاتے ہے۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر