تحقیق کے بغیر کوئی یونیورسٹی ترقی نہیں کر سکتی،ڈاکٹر افضل جاوید

  تحقیق کے بغیر کوئی یونیورسٹی ترقی نہیں کر سکتی،ڈاکٹر افضل جاوید

  



لاہور(پ ر)کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پاکستان میں موجود ساؤتھ ایشیا کا قدیم ترین اورسب سے معتبر میڈیکل تدریس کا ادارہ ہے۔ ورلڈ سائکیٹرک ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر افضل جاوید نے کے ای ایم یو کا دورہ کیا ان سے کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل اور دیگر پروفیسرز نے ملاقات کی۔ اس موقع پرپروفیسر ڈاکٹر اعجاز ترین جو کہ پاکستان میں سائیکیٹری کے بانیوں میں شامل ہیں،پروفیسر ڈاکٹر آفتاب آصف اور دیگر اساتذہ بھی موجود تھے۔ وائس چانسلر پروفیسر خالد مسعود گوندل نے ڈاکٹر افضل جاوید کو یونیورسٹی کے انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ، ریسرچ اور میڈیکل درس و تدریس کے جاری پراجیکٹس کے بارے میں تفصیلی بریفینگ دی۔ پروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل نے مہمانان گرامی کو کے ای ایم یو کے ذیر تعمیر نئے کیمپس کے بارے میں بھی آگاہ کیا اوراس پراجیکٹ کے بارے میں مہمانوں کی رائے لی۔ مہمانان گرامی نے پروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل کی یونیورسٹی کی ترقی کے لئے خدمات اور سرگرمیوں کو سراہا۔ قائد اعظم بلاک میں واقع لائبریری میں ڈاکٹر افضل جاوید نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے اس بات کی نشاندہی کی کہ آج کی دنیا میں ریسرچ کے بغیر کوئی بھی یونیورسٹی ترقی نہیں کر سکتی۔ انہوں نے اس بات پر ذور دیا کہ کے ای ایم یو میں انہیں جو تعلیم حاصل ہوئی تھی اس بنیادی تعلیم کے بغیر آج وہ ورلڈ سائکاٹری ایسو سی ایشن کے صدر نہ ہوتے۔ اس دورہ کے بعد ڈاکٹر افضل جاوید، پروفیسر اعجاز ترین اور پروفیسر آفتاب آصف اور دیگر اساتذہ وائس چانسلر صاحب کے ساتھ ڈپارٹمنٹ آف سائکاٹری گئے جہاں ان کے اعزاز میں ایک تحقیقاتی سیمینار کا اہتمام کیا گیا

مزید : میٹروپولیٹن 1