نو مسلم لڑکی عائشہ بی بی بیان قلمبند کرانے کیلئے 25 فروری کو طلب

نو مسلم لڑکی عائشہ بی بی بیان قلمبند کرانے کیلئے 25 فروری کو طلب

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنے والی ننکانہ صاحب کی نو مسلم لڑکی عائشہ بی بی کو بیان قلمبند کرانے کے لئے 25 فروری کو طلب کرلیا،سکھ مذہب چھوڑ کر مسلمان ہونے والی اور اس کے شوہر حسان نے درخواست دائر کررکھی ہے کہ پسند کی شادی کرنے پر لڑکی کے والدین انہیں ہراساں کررہے ہیں اور حسان کوجھوٹے مقدمات میں ملوث کیا جارہاہے،گزشتہ روز ڈائریکٹر سائبر کرائم اور ڈائریکٹر فرانزک سائنس ایجنسی نے خاتون کے شوہر کے موبائل ڈیٹا کی رپورٹ عدالت میں پیش کی،درخواست گزاروں کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ گورنر پنجاب نے فریقین کے درمیان صلح کروائی اس کے بعد بھی انہیں ہراساں کیا جا رہا ہے،خاتون کا موقف ہے کہ سکیورٹی خدشات کے نام پر دارلامان میں قید رکھا گیا ہے، اسے شوہر کے ساتھ جانے کی اجازت اور دونوں کو سیکیورٹی فراہم کرنے کاحکم دیاجائے،فاضل جج نے خاتون کو 25فروری کو بیان قلمبند کرانے کے لئے طلب کرلیاہے۔

نو مسلم

مزید : صفحہ آخر