مسلم لیگ ن کا نوا ز شریف کی ضمانت میں توسیع سے متعلق کمیٹی کے اجلاس کا بائیکاٹ، آج دوبارہ اجلاس طلب

مسلم لیگ ن کا نوا ز شریف کی ضمانت میں توسیع سے متعلق کمیٹی کے اجلاس کا ...

  



لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ (ن) نے نواز شریف کی ضمانت میں توسیع پر خصوصی کمیٹی کے اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے اپنا موقف خط کے ذریعے بھجوا دیا۔تفصیلات کے مطابق صوبائی وزیر قانون راجا بشارت کی سربراہی میں قائم کمیٹی کے گزشتہ روز ہونے والے اجلاس میں (ن) لیگ کے رہنماؤں کو بلایا گیا تھا،لیگی رہنماؤں نے نواز شریف کی صحت پر بریفنگ دینی تھی،جس کی روشنی میں حکومت نے نواز شریف کی سزا معطلی میں توسیع کا فیصلہ کرنا ہے تاہم (ن) لیگ کے رہنماؤں نے خود آنے کے بجائے اپنا موقف بذریعہ خط حکومت کو بھجوا دیا ہے۔مسلم لیگ (ن) کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل عطا اللہ تارڑ کی جانب سے ایڈیشنل چیف سیکرٹری ہوم کو خط میں کہا گیا کہ حکومتی اجلاس  بہت کم وقت کے نوٹس پر بلایا گیا، اس لئے شریک ہونا ممکن نہیں لہٰذا کسی اور تاریخ کو اجلاس مقرر کرکے قبل از وقت اطلاع دی جائے۔ خط میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کے لندن سے ویڈیو لنک پر اجلاس میں شرکت کا بھی اہتمام کیا جائے۔دوسری جانب نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کیلئے خصوصی کمیٹی کا اجلاس وزیر قانون اور کمیٹی سربراہ راجہ بشارت کے زیر صدارت ہوا۔ کمیٹی میں وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ مومن آغا بھی شریک ہوئے۔ اجلاس میں فیصلہ کیا کہ نواز شریف کے نمائندوں کو مزید 24گھنٹے کا وقت دیا جائے گا۔ اجلاس کے بعد کمیٹی کے سربراہ راجہ بشارت نے بتایا کہ انصاف کے تقاضے پورے کرنے کیلئے مزید وقت دینے کا فیصلہ کیا گیا، لیگی نمائندے جمعہ کے روز پیش ہو کر نواز شریف کی صحت بارے بریف کریں تا کہ ان کی رپورٹس کا جائزہ لے کر میڈیکل بورڈ کوئی فیصلہ کر سکے اور اپنی سفارشات حکومت پنجاب کو دے سکیں۔راجہ بشارت نے کہا کہ اگر نواز شریف کے نمائندے جمعہ کے روز طلب کردہ اجلاس میں نہ آئے تو پھر حکومتی کمیٹی اپنی سفارشات دے دی گی، جس کی بنیاد پر نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کا فیصلہ ہوگا۔ 

بائیکاٹ/طلبی

لندن(آئی این پی)مسلم لیگ(ن) کے قائد وسابق وزیراعظم نواز شریف نے آپریشن سے قبل اپنے ساتھ پیش آنیوالے تمام حالات و واقعات اور سیاسی معاملات کو تحریری شکل دے کر تمام دستاویزات کو اپنے خاندان کے حوالے کر دیا، سابق وزیر اعظم چند دنوں میں اہم شخصیات سمیت سینئر صحافیوں سے ملاقات کریں گے۔نجی ٹی وی کے مطابق اگر 24فروری کو ان کا آپریشن کیا جاتا ہے تو وہ اپنے ساتھ ہونیوالے واقعات کے بارے میں بات کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔نجی ٹی وی کے مطابق نواز شریف مریم کے لندن پہنچنے تک آپریشن کیلئے تیار نہیں لیکن ان کی والدہ شمیم بیگم انہیں منانے کی کوشش میں مصروف ہیں۔

نوازشریف/امکان

مزید : صفحہ اول