ڈیموکریٹک صدارتی امیدواروں کا نواں مباحثہ، مائیک بلوم برگ ہدف تنقید

    ڈیموکریٹک صدارتی امیدواروں کا نواں مباحثہ، مائیک بلوم برگ ہدف تنقید

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) امریکی ریاست نیواڈا کے شہر لاس ویگاس میں بدھ کی رات ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدواروں کے اب تک ہونیوالے نویں مباحثے میں خاتون سینیٹر الزبتھ وارن کی کارکردگی سب سے متاثر کن رہی،تاہم مباحثے کی خاص بات یہ تھی کہ تمام امیدواروں نے اس دوڑ میں دیر سے شامل ہونیوالے ارب پتی نیویارک کے سابق میئر مائیک بلوم برگ کو نشانہ بنایا جو ریپبلکن صدر ٹر مپ کیخلاف زور و شور سے اشتہاری مہم پر پیسہ خرچ کر رہے ہیں۔ مباحثے میں ڈیموکریٹک ٹکٹ کے چھ امیدواروں نے حصہ لیا باقی چار ا مید واروں میں اب تک مقبولیت میں سب سے آگے جانیوالے بزرگ سینیٹر برنی سنیڈرس، خاتون سینیٹر ایمی کلوبچر اور سابق میئر پیٹ بیٹجج بھی کامیاب شمار کئے گئے۔تاہم مبصرین کے مطابق اس مباحثے میں بلوم برگ اور سابق نائب صدر جوبائیڈن بری طرح ناکام رہے۔ سینیٹر الزبتھ وارن نے بلوم برگ پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ڈیموکریٹک پارٹی کے ووٹرز کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ کیا وہ ایک ارب پتی ضد ی شخص(ڈونلڈ ٹرمپ) کی جگہ ایک اور ارب پتی کو لانے کا رسک لے سکتے ہیں۔ الزبتھ اس مباحثے میں اچھی کارکردگی دکھانے کے باوجود اب انتخابی مہم میں بہت پیچھے رہ گئی ہیں۔ مقبولیت میں پہلے نمبر پر رہنے والے برنی سنیڈرس نے ٹرمپ کے دور میں جاری ہیلتھ کیئر پلان پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ کامیاب ہونے کی صورت میں ہیلتھ کیئر اور دیگر ایسے منصوبے لے کر آئیں گے جو تمام شہریوں کی زندگی میں انقلاب لے کر آئیں گے۔

ڈیموکریٹک مباحثہ

مزید : علاقائی