برطانوی آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ آن کشمیر کا دورہ ایل اوسی

  برطانوی آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ آن کشمیر کا دورہ ایل اوسی

  



چناری(آن لائن)برطانوی پارلیمنٹ میں آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ آن کشمیر کے وفد نے آزادکشمیر کے دورہ کے دوران جمعرات کو لائن آف کنٹرو ل چکوٹھی کا دورہ کیا۔ وفد کی قیادت برطانوی پارلیمنٹ میں آل پارٹیز پارلیمنٹری گروپ آن کشمیر کی چیئرپرسن ڈیبی ابراھام نے کی جبکہ وفد کے دیگر اراکین میں ممبران پارلیمنٹ بیرسٹر عمران حسین، جیمزدالی،مارک ایسٹووڈ،طاہر علی، لارڈ قربان حسین،جوڈیتھ کمنز، سارا برٹکلف کے علاوہ تحریک حق خودارادیت انٹرنیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور مانچسٹر سے کونسلر یاسمین ڈار اور سابق مئیر اولڈہم شاداب قمربھی شامل تھے۔دورہ کنٹرول لائن کے دوران برطانوی وفد کو بریفنگ دی گئی جس میں بتایا گیا کہ بھارت بلا اشتعال فائرنگ کر کے سول آبادی کو نشانہ بناتا ہے۔ بھارت نے گزشتہ سال مارچ سے یکطرفہ طور پر سرینگر مظفرآباد بس اور ٹرک کو بند کر رکھا ہے جس کے باعث منقسم کشمیر کے لوگوں کو شدید مشکلات اور پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔بعدازاں وفد نے وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر سے بھی ملاقات کی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ نریندر مودی کے 5اگست کے بعد اقدامات نے نام نہاد بھارتی جمہوریت کے دعوے کو بے نقاب کردیا ہے، مودی 14000گرفتار نوجوانوں کے لیے خصوصی حراستی مراکز قائم کررہا ہے۔ 5 اگست کے بعد مقبوضہ کشمیر ایک انسانی جیل ہے جس کا بیرونی دنیا سے کوئی رابطہ نہیں۔ وزیراعظم نے وفدکوبتایاکہ مودی حکومت کی جانب سے ڈیبی ابراہمز کو ڈی پورٹ کرنا خود بھارتی حکومت کے خلاف چارج شیٹ ہے، وفد کو آزادکشمیر میں خوش آمدید کہتے ہیں، وفد آزاد کشمیر میں جہاں جانا چاہے جاسکتا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ کشمیری عوام کو اپنی مرضی کے مطابق اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق دیا جائے۔ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق راے شماری کے علاوہ مسئلہ کا کوئی حل نہیں۔

دورہ ایل او سی

مزید : علاقائی