پیف پارٹنرز کو فی بچہ 550روپے دینا زیادتی ہے،محمد وسیم

پیف پارٹنرز کو فی بچہ 550روپے دینا زیادتی ہے،محمد وسیم

  



لاہور(سٹی رپورٹر)لاہور میں نیپ ایسوسی ایشن کی ایک کارنر میٹنگ ہوئی جس کی صدارت سرمحمد وسیم نے کی اس میٹنگ میں جنرل سیکرٹری میاں مقصود احمد، سیکرٹری فنانس علی جان، کوآرڈینیٹر شیخوپورہ محمد طارق اور دیگر ساتھیوں نے شمولیت اختیار کی۔ اس موقع پر صدر نیپ محمد وسیم نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار، وزیرتعلیم مراد راس اور صوبائی اور قومی اسمبلیوں میں بیٹھے ہوئے ملک کے حکام بالا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ پیف پارٹنرز حکومت کو ماہانہ کروڑوں روپے کا فائدہ پہنچا رہے ہیں، صدر نیپ کا کہنا تھا کہ تقریباً تیس لاکھ سے زائد بچوں کو تعلیم دینے کیلئے پیف پارٹنرز جو قربانیاں دے رہے ہیں ان کی مثال نہیں ملت۔ حکومت کے دیئے گئے 550 روپے ایک طالبعلم کیلئے ناکافی ہیں جبکہ پیف پارٹنرز اپنا ذاتی سرمایہ خرچ کرکے پنجاب کے غریب طالب علموں کو زیرتعلیم سے آراستہ کر رہے ہیں۔

پڑھے لکھے پنجاب کے مشن میں پیف انتظامیہ نے بھی ایک اہم رول ادا کیا جس میں چیئرمین واثق قیوم، ڈی ایم ڈی کرنل عمران یعقوب، اے ڈی یو ڈائریکٹر کرنل ہمایوں ستار، کرنل اطہر، میاں شفیق نے اہم کردار ادا کیا۔نئے آنے والے ایم ڈی شمیم آف کو بھی ایک اہم رول ادا کرنا چاہیے تھا انہوں نے آتے ہی پیف پارٹنرز کیلئے مشکلات کھڑی کردیں۔ پیف کے NSPسے منسلک کیلئے مشکلات کا سبب بنے۔ حکومت کو پیف پارٹنرز کی اہمیت کو اجاگر کروانے کے بجائے بے جا قسم کی مانیٹرنگ شروع کروا کے پیف جیسے ادارے مفلوج کر رہے ہیں میں جناب ایم ڈی پیف سے امید کرتا ہوں کہ پیف کے موجودہ سسٹم کو سمجھیں اور موجودہ سینئر لوگوں سے رہنمائی لیں گے اور پیف جیسے عظیم ادارے سے منسلک سکولوں کے مسائل جن میں پیمنٹ کی باقاعدگی‘ پیمنٹ میں اضافہ‘ QATرزلٹ میں آسانی‘ کینسل اور پینڈنگ سکولوں کی بحالی‘ SISکے ایشوز‘ بے جا جرمانے اور اونر شپ کے مسائل حل کر کے پیف پارنٹرز کے دلوں میں اپنی جگہ بنائیں گے۔ تاکہ پیف پارٹنرز پنجاب میں مزید غریب بچوں کی تعلیم میں ایک اہم رول ادا کر سکیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4