احتجاج کے دوران نوجوان لڑکی کے ”پاکستان زندہ باد“ کے نعرے، بغاوت کا مقدمہ، جیل پہنچا دی گئی

احتجاج کے دوران نوجوان لڑکی کے ”پاکستان زندہ باد“ کے نعرے، بغاوت کا مقدمہ، ...
احتجاج کے دوران نوجوان لڑکی کے ”پاکستان زندہ باد“ کے نعرے، بغاوت کا مقدمہ، جیل پہنچا دی گئی

  



بنگلور(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں متنازعہ شہریتی ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کے دوران ایک لڑکی نے پاکستان زندہ باد کے نعرے لگا دیئے جس پر اس کے خلاف بغاوت کا مقدمہ درج کرکے اسے جیل میں ڈال دیا گیا ہے۔ گلف نیوز کے مطابق اس 19سالہ لڑکی کا نام ایمولیا ہے جو بھارتی شہر بنگلور میں ہونے والے ایک احتجاجی مظاہرے سے خطاب کر رہی تھی۔ اس احتجاج کے دوران سٹیج پر آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسد الدین اویسی بھی موجود تھے۔ جب تقریر کے دوران ایمولیا نے پاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے تو اسد الدین اویسی اٹھ کھڑے ہوئے اور لڑکی کو تقریر سے روکتے ہوئے پکڑ کر مائیک سے دور کر دیا۔

رپورٹ کے مطابق اگلے روز پولیس نے ایمولیا کو اس کے گھر سے گرفتار کر لیا اور بغاوت کا مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کر دیا جہاں سے اسے 14روزہ جوڈیشل ریمارڈ پر جیل بھیج دیا گیا ہے۔ اس واقعے کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی اور انتہاءپسند ہندوﺅں نے اسد الدین اویسی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جس پر انہوں نے ایمولیا کے ساتھ لاتعلق کا اظہار کر دیا اور کہا کہ ایمولیا کا ان کی جماعت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

مزید : بین الاقوامی