سیاسی مفادات کے لیے پہلے شہر قائد کو6اضلاع میں تقسیم کیاگیا اور اب۔۔۔میئر کراچی نے نئی سازش کا پول کھول دیا

سیاسی مفادات کے لیے پہلے شہر قائد کو6اضلاع میں تقسیم کیاگیا اور اب۔۔۔میئر ...
سیاسی مفادات کے لیے پہلے شہر قائد کو6اضلاع میں تقسیم کیاگیا اور اب۔۔۔میئر کراچی نے نئی سازش کا پول کھول دیا

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) میئر کراچی وسیم اختر نے کہاہے کہ سیاسی مفادات کے لیے پہلے شہرکو6اضلاع میں تقسیم کیاگیااور اب لیاری اور گڈاپ نامی 2مزید اضلاع بنانے کی سازش ہورہی ہے،کراچی کو مزید تقسیم کرنے کی اب ہرسازش کا ڈٹ کامقابلہ کیاجائے گا۔

 بلدیاتی مسائل پر منعقدہ سیمینار میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے وسیم اختر نے کہاکہ پیپلزپارٹی نے پورا کراچی شہر کو تباہ کردیاہے،

میئر شپ اختیارات و حقوق کاترمیمی مسودہ تیارکرلیاگیاہے جس میں شہر کی تاجربرادری ساتھ دے،مجوزہ ترامیم سے ایم کیو ایم کو نہیں بلکہ  پورے شہر کو فائدہ ہوگا،مجھے  ایم کیو ایم نے ضرور منتخب کیا لیکن میں پورے کراچی کا میئرہوں،شہر کے حالات سے تاجر برادری براہ راست متاثر ہورہی ہے،میں بلدیاتی اداروں کی بحالی کے لئے عدالتوں میں موجود ہوں،میں نے آنے کے بعد اعلیٰ عدلیہ کا سہارا لیا،آرٹیکل 140اے کی پٹیشن داخل کی،سپریم کورٹ نے بلدیاتی انتخابات کروائے،ورنہ سیاسی جماعتیں بلدیاتی انتخابات نہ کرواتی،منتخب بلدیاتی نمائندوں نے اختیارات کے نہ ہونے کے باوجود اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے، سپریم کورٹ سے درخواست  ہے کہ وہ بلدیاتی اداروں کے حقوق بھی بحال کرے۔میئر کراچی وسیم اختر نے کہاکہ اختیارات دینے کے حوالے سے اب گراؤنڈ بن رہا ہے اورجلد ہی کچھ نا کچھ ہوگا،شہر کو پل اور انڈرپاسز نہیں بلکہ علاقوں کے بنیادی مسائل کاحل چاہئے،وفاق اور سندھ کو کراچی اور عالمی ڈونرزایجنسیوں سے اربوں روپے آئے لیکن ان سے کے سی آر نہیں چلتی، سپریم کورٹ کے سینئر ججز ازخود کراچی کے مسائل پر توجہ دے رہے ہیں۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی