پیوٹا نے وائس چانسلر کو چارٹر آف ڈیمانڈ تحریری طور پر ارسال کردیا 

  پیوٹا نے وائس چانسلر کو چارٹر آف ڈیمانڈ تحریری طور پر ارسال کردیا 

  

پشاور (سٹی رپورٹر)پشاور یونیورسٹی ٹیچرز ایسو سی ایشن (پیوٹا)نے وائس چانسلر پشاور یونیورسٹی کو اپنا سات نکاتی چارٹر آف ڈیمانڈز تحریری طور پر ارسال کر دئے اساتذہ کی جانب سے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اریس کو لکھے گئے خظ میں کہا گیا ہے کہ چھ فروری کو ہونیوالا سنڈڈیکیٹ اجلاس غیر قانونی تھا کیونکہ اجلاس کا کورم مکمل نہیں تھا اور اجلاس میں غیر متعلقہ افراد تھے اور مذکورہ سنڈڈیکیٹ کے تمام فیصلے غیر قانی قرار دئے جائے  جبکہ انتظامیہ کی جانب سے ملازمین کو ادھی تنخواہ کی وجہ سے اساتزہ کی عزت نفس مجروع ہوئی ہے اساتزہ سے معافی مانگی جائے اور ایسے فیصلے کرنیوالوں کے ذمہ ار ٹہرایا جائے پیوٹا کی جانب سے وائس چانسلر کے نام خط میں کہا گیا ہے کہ ہائیر ایجوکیشن پارٹمنت خیبر پختونخوا تجویز کردہ  اساتذہ کی تنخواہ اور الونسز  میں کمی ایک غیر قانی ہے اور اسکی بھرپور مذمت کرتے ہے جبکہ اساتذہ کیلئے اپریل2018میں مشتر کی گئی  تھی لیکن اس پر تا حال کوئی کوکارروائی نہیں ہوئی اس سلسلے میں جلد از جلد سلیکشن بورڈ اور سنڈڈیکیٹ سے اپرول لیا جائے  تاکہ مستحق اساتزہ کوحق مل سکے خط میں مزید کہا گیا ہے کہ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے گائدلائنز کے مطابق سالانہ  اساتذہ کی تعداد پوری کی جائے کیونکہ سالانہ طلبہ کی شرح زیادہ ہے جبکہ اساتذہ کی شرح اس لحاظ سے کافی نہیں ہے پیوٹا نے مطالبہ کیا ہے کہ خالی اسامیوں پر تعیناتی کیلئے مشتہری کی جائے تاکہ یونیورسٹی تعلیمی سرگرمیاں احسن طریقے سے جارہ ہو اور  بیرونی اور اندرونی ایلویٹرز کے بقایہ جات کی ادائیگی اور سیلف سپورٹ ایوننگ پروگران کی ادائیگی جلد از جلد کی جائے اور وفاقی حکومت کی جانب سے تنخواہوں میں 25فیصد اضافہ کا فیصلہ میں یونیورسٹی ملازمین کو بھی شامل کیا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -