وزیراعظم عمرہ اور حج کیلئے عمر کی شرط 18سے 50سال ختم کرائیں: ثنا ء اللہ خان 

وزیراعظم عمرہ اور حج کیلئے عمر کی شرط 18سے 50سال ختم کرائیں: ثنا ء اللہ خان 

  

لاہور (ڈویلپمنٹ سیل) ٹریول، عمرہ اور حج ٹریڈ کو ریلیف نہ دینے سے ہزاروں خاندان فاقہ کشی پر مجبور ہیں۔ وزیر اعظم عمرہ اور حج کیلئے عمر کی شرط 18سے 50سال ختم کرائیں اور حج 2021ء میں اہل پاکستان کو شامل کرانے کیلئے کردار ادا کریں پرائیویٹ سیکٹر ایس او پیز کے مطابق حج آپریشن کرنے کیلئے تیار ہے وزارت مذہبی امور سرکاری سکیم کی طرح پرائیویٹ سکیم کی حج پالیسی بھی پانچ سال کی مرتب کرنے کیلئے ہوپ کو اعتماد میں لے۔ پنجاب حکومت کی طرف سے ٹریول ایجنسی ایکٹ سمجھ سے بالا تر تھا پی ار اے کے نوٹسزواپس کیے جائیں۔ دو سال کے لیے تمام ٹیکسیز معاف کیے جائیں اور بلا سود قرضے جاری کرنے کا پیکیج دیا جائے۔ان خیالات کا اظہار سابق مرکزی چیئرمین ہوپ پاکستان الحاج ثناء اللہ خان نے روزنامہ پاکستان سے خصوصی انٹر ویو میں کیا،انہوں نے کہا عمرہ کے لیے 18سے 50سال کی لازمی شرط کی وجہ سے پاکستان میں عمرہ کا کاروبار 99فیصد ختم ہو گیا ہے کرونا سے پہلے اب تک عمرہ سیزن میں 12لاکھ افراد عمرہ کی سعادت حاصل کر چکے ہوتے ہیں۔ کرونا اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے اب تک ایک ہزار افراد عمرہ نہیں کر سکے بنیادی وجہ حکومت کی عدم دلچسپی ہے انڈونیشاء اور ملائشیاء کی حکومت کے مطالبے پر عمر کی حد 60سال کر دی گئی ہے پاکستان بھی عمرہ کاروبار کو بچانے کے لیے فوری طور پر 18سے 50سال کی شرط ختم کرائیں اور کاروبار بچانے کے لیے کردار ادا کریں ثناء اللہ خان نے کہا وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری سیکرٹری سردار اعجاز خان جعفر جوائنٹ سیکرٹری حج شاہد سندھو کی خدمات قابل ستائش ہیں ان کی حج 2021ء کو کامیاب بنانے کے لیے بھی تیاریاں بھی قابل قدر ہیں انہوں نے کہا حج کو سستا کرنے اور موثر بنانے کے لیے لانگ ٹرم پالیسی ضروری ہے سرکاری کی طرح پرائیویٹ سکیم کی پالیسی بھی 5سال کی بنائی جائے۔ ثناء اللہ خان نے کہا ٹریول، عمرہ اور حج کو باقاعدہ صنعت تسلیم کیا جائے وزیر اعظم باقاعدہ اعلان کریں انہوں نے کہا تینوں شعبے سب سے زیادہ ریونیو دینے والے ہیں نظر انداز کرنا لمحہ فکریہ ہے۔ سابق چیئرمین نے مطالبہ کیا عمرہ، حج ٹریڈ کے لیے ریلیف پیکج دیا جائے۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان رمضان عمرہ اور حج 2021ء میں اہل پاکستان کو شامل کرانے کے لیے سعودی حکومت سے مذاکرات کریں اور حرمین شریفین بند ہونے کی وجہ سے امت مسلمہ میں پائے جانے والے اضطراب سے اگاہ کریں۔ انہوں نے کہا کوئی بنک ٹریول، عمرہ، حج ٹریڈ کو قرض دینے کے لیے تیار نہیں وزیر اعظم بلا سود قرضے دینے کا اعلان کریں تاکہ کاروبار بحال کیا جا سکے۔ 

ثناء اللہ خان 

مزید :

صفحہ آخر -