آزادیِ اظہار کا یہ مطلب نہیں کہ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے دل چھلنی کریں، پیر نور الحق قادری نے عالمی برادری کو جھنجھوڑ دیا 

آزادیِ اظہار کا یہ مطلب نہیں کہ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے دل چھلنی کریں، پیر نور ...
آزادیِ اظہار کا یہ مطلب نہیں کہ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے دل چھلنی کریں، پیر نور الحق قادری نے عالمی برادری کو جھنجھوڑ دیا 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق نےکہاہےکہ آزادیِ اظہار کا یہ مطلب نہیں کہ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے دل چھلنی کریں،ہمیں جس انتشار کی طرف لے جانے کی کوشش کی جارہی ہے اس کو اتحاد کےساتھ ختم کرنا ہے،ہمیں مسائل کے حل کے لئے حضرت فاطمتہ الزہرا رضی اللہ عنہا کی سیرت سے استفادہ کرنا ہوگا ۔

 جامعہ نعیمیہ میں خاتونِ جنت کانفرنس سےخطاب کرتےہوئےپیرنور الحق قادری نےکہاکہ اللہ کی رحمت سیدہ فاطمتہ الزہرا رضی اللہ عنہا  کی عفت کےساتھ چلتی ہے،ہم در زہرا کے سوالی ہیں اور انہی کے توسط سے مانگتےہیں،آپ کی زندگی میں بہت مشکلات آئیں مگر آپ کے صبر کی بھی انتہا تھی،اسی لئے آپ کا ایک لقب صابرہ ہے ۔

وفاقی وزیر مذہبی امور کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے ایک افتراق کا ماحول پیدا کیا گیا ہے،یمن، شام، بحرین، عراق سمیت کئی ممالک میں شعیہ سنی  کی بنیاد پر تباہی کی گئی ، آزادی اظہار کا یہ مطلب نہیں کہ آپ ڈیڑھ ارب مسلمانوں کا دل چھلنی کردیں،ناموس رسالت ﷺکا بڑا جواب ہوناچاہیئے، اس حوالے سے احتجاج کی اپنی اہمیت ہے تاہم اس سے عوام کو مشکل نہ ہو ، اس حوالے سے موثر ترین حل یہ ہے کہ مغرب کے انصاف پسند طبقات کو باورکرائیں کہ اس عمل سے دنیا میں امن خراب ہورہاہے،صرف ایک لیڈر کے کہنے سے کچھ نہیں ہوگا، امت کو اس حوالے سے متحد ہوکر اقدام اٹھانا ہوگا۔

مزید :

قومی -