خسرہ کا خطرہ برقرار، مزید چار ”پھول“مرجھاگئے

خسرہ کا خطرہ برقرار، مزید چار ”پھول“مرجھاگئے
  • خسرہ کا خطرہ برقرار، مزید چار ”پھول“مرجھاگئے
  • خسرہ کا خطرہ برقرار، مزید چار ”پھول“مرجھاگئے

کندھ کوٹ ، لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) خسرہ کا خطرہ برقرارہے اور اب سندھ سے دیگر صوبوں میں بھی پھیل گیاہے جبکہ پیر کو بھی چارماﺅں کی گودیں اجڑ گئیں جس کے بعد مرنے والے بچوں کی تعداد 459ہوگئی ہے جبکہ صرف سندھ میں 429بچے موزی مرض کا شکار ہوگئے ۔دوبچوں کی موت کے بعد کندھ کوٹ میں خسرہ کے باعث مرنیوالے بچوں کی تعداد157ہوگئی ہے جبکہ شکارپورمیں بھی دوبچے زندگی سے ہاتھ دھوبیٹھے ۔موزی مرض کی وجہ سے اب تک پنجاب میں پندرہ ، بلوچستان میں دس اور مہمند ایجنسی میں پانچ بچے جاں بحق ہوگئے ہیں ۔ رواں مہینے لاہور کے میو ہسپتال میں پینتیس بچوں کو علاج کیلئے لایاگیاجس کے پیش نظر محکمہ صحت پنجاب نے ٓصوبے بھر کے ہسپتالوں میں الرٹ جاری کردیاہے ۔وزیراعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی خواجہ سلمان رفیق نے ہسپتال انتظامیہ کو خسرہ کے مریضوں کو ہرممکن سہولیات فراہم کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں ۔

مزید : تعلیم و صحت