بنگلہ دیش میں انسانیت کیخلاف جرائم پر جماعت اسلامی کے سابق رہنماءکو سزائے موت

بنگلہ دیش میں انسانیت کیخلاف جرائم پر جماعت اسلامی کے سابق رہنماءکو سزائے ...
بنگلہ دیش میں انسانیت کیخلاف جرائم پر جماعت اسلامی کے سابق رہنماءکو سزائے موت

  

ڈھاکہ(مانیٹرنگ ڈیسک) بنگلہ دیش میں متنازع حکومتی ٹربیونل نے جماعت اسلامی کے ایک سابق رہنما کو چالیس برس قبل ملک کی آزادی کی تحریک کے دوران انسانیت کے خلاف مبینہ جرائم پر موت کی سزا سنادی ہے۔ڈھاکہ میں ٹربیونل نے مولانا عبدالکلام آزاد کو یہ سزا ان کی عدم موجودگی میں سنائی۔ا±ن کے اہل خانہ کے مطابق انہوں نے گزشتہ برس اپریل میںسیکیورٹی فورسز کے چھاپے سے قبل ملک چھوڑ دیا تھا اور ملک چھوڑنے کے بعد جماعت اسلامی نے ا±ن کی رکنیت بھی منسوخ کر دی تھی۔جیونیوز کے مطابق استغاثہ کا کہنا ہے کہ عبدالکلام آزاد نے نہ صرف 1971 ءکی جنگ میں 6 ہندوﺅں کوگولی مار کر ہلاک کیا بلکہ ایک ہندو عورت کو جنسی تشدد کا نشانہ بھی بنایا۔رپورٹ کے مطابق مولانا عبدالکلام آزاد وہ پہلے شخص ہیں جنہیں حکومت کی جانب سے تین سال قبل بنائے جانے والے انٹرنیشنل کرائمز ٹربیونل نے مجرم قرار دیا۔

مزید : بین الاقوامی