زرعی ادویات کی چیکنگ کیلئے مثالی ریفرنس لیب قائم کی جائے گی

زرعی ادویات کی چیکنگ کیلئے مثالی ریفرنس لیب قائم کی جائے گی

 لاہور(پ ر) صوبائی حکومت کے تحت زرعی ادویات کی چیکنگ کے سسٹم کی شفافیت اور حکومت کے ریگولیٹری کردار کو مزید موثر بنانے کے لئے سٹیک ہولڈرز کے مشورہ سے ایک مثالی ریفرنس لیب کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے جس سے کاشتکاروں کو معیاری زرعی ادویات کی فراہمی یقینی بنانے میں مدد ملے گی۔ یہ بات سیکرٹری زراعت پنجاب ڈاکٹر اعجاز منیر نے ایگریکلچر ل پیسٹی سائیڈز ٹیکنیکل ایڈوائزری کمیٹی (APTAC)کے دوسرے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی ۔ اجلاس میں ایڈیشنل سیکرٹری زراعت (ٹاسک فورس ) سید حیدر اقبال ،ڈائریکٹر جنرل زراعت (پیسٹ وارننگ) پنجاب ملک محمد فیاض ،ڈائریکٹر جنرل زراعت (توسیع) ڈاکٹر انجم علی، ڈائریکٹر جنرل زراعت (تحقیق) ڈاکٹر عابد محمود، ڈائریکٹر انٹامالوجی ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد حافظ محمد سلیم ، ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ آف سائل کیمسٹری اینڈ انوائرنمینٹل سائنسز ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آبادڈاکٹر ریاض احمد سیال،کاشتکاروں کے نمائندے نواب فرحت اﷲ خان اور فاروق باجوہ،پاکستان کراپ پروٹیکشن ایسوسی ایشن کی طرف سے جاوید سلیم قریشی ، سعد اکبر خان، جمشید اقبال چیمہ،الطاف شاہد، فاروق شاہد ، پنجاب پیسٹی سائیڈز ڈیلرز ایسوسی ایشن کی طرف سے ملک عمران و دیگر افسران نے شرکت کی۔ سیکرٹری زراعت نے اس موقع پر کہا کہ ریفرنس لیب کے قیام کا نوٹیفکیشن آئندہ چند روز میں کر دیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اٹھارویں آئینی ترمیم کے بعد زراعت ایک صوبائی سبجیکٹ بن چکا ہے اس لیے صوبہ پنجاب میں ایگریکلچر ل پیسٹی سائیڈز ٹیکنیکل ایڈوائزری کمیٹی (APTAC) کی تشکیل کا نوٹیفیکیشن جاری کیا جا چکا ہے۔کمیٹی کے تحت زرعی ادویات کے کاروبار اور رجسٹریشن کو صوبائی دائرہ کار میں لانے کے لئے قوانین میں ضروری ترامیم کی جا رہی ہیں۔

ان اقدام سے کاشتکاروں کو معیاری زرعی ادویات میسر ہوں گی جس سے نہ صرف کاشتکاروں کی فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ ہوگا بلکہ فصلات کی ملکی پیداوار میں اضافہ سے معیشت مستحکم ہوگی۔

مزید : کامرس


loading...