جیب تراشوں اور چوروں نے ایل ڈی اے آفس میں ڈیرے جما لیے

جیب تراشوں اور چوروں نے ایل ڈی اے آفس میں ڈیرے جما لیے

لاہور( کرائم سیل) ایل ڈی اے آفس کے ون ونڈو آپریشن کی جگہ کو متعلقہ حکام نے جیب تراشوں اور چوروں کے حوالے کرکے خود آنکھیں بند کرلیں روزانہ درجنوں موبائیل فونز اور ہزاروں کی نقدی چوری ہونے لگی جبکہ ڈی جی ایل ڈی اے اور چیمہ اور دوسرے آفیسران نے جیب تراشوں کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے آج تک ان کے خلاف کوئی بھی قانونی کارروائی نہیں کروائی گئی جبکہ وہاں آنے والے سائلین نے ایل ڈی اے کے ون ونڈو کے مقام پر ہونے والی جیب تراشیوں اور چوریوں کے خلاف احتجاج کیا اوروزیراعلیٰ پنجاب اور اعلیٰ حکام سے اپیل کی ہے کہ ان وارداتوں پر فوری قانونی کارروائی کی جائے تفصیل کے مطابق لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے کچھ عرصہ قبل ہیڈ آفس میں ون ونڈو آپریشن شروع کیا جہاں پر ایل ڈی اے سے متعلقہ مسائل کو حل کرنے کے سٹاف کو ٹریننگ دی گئی جہاں پر سائلین اپنے مسائل لے کر آتے ہیں کچھ عرصہ سے اس مقام پر جیب تراشوں اور چوروں نے ڈیرے جما رکھے ہیں روزنامہ’’ مشرق‘‘ کوئٹہ کے چیف ایگزیکٹو سید کامران ممتاز ایک روز قبل اپنے کام سے وہاں گئے تو ان کے ارد گرد تین چار افراد کھڑے ہوگئے اور آپس میں باتیں کرتے کرتے ان کی جیب سے ہزاروں روپے مالیت کا موبائیل فون اور ہزاروں کی نقدی نکال کر رفوچکر ہوگئے سید کامران شاہ نے وہاں پر موجود ایل ڈی اے کے اہلکاروں اور ان کے آفیسران کو اس بارے میں بتایاکہ ان جیب تراشوں اور چوروں کی سی سی فوٹیج بھی آپ کے پاس موجود ہوگی،چیک کرکے ان خلاف کارروائی کریں تو انہوں نے سیدھا جواب دے دیا کہ آپ پولیس کے پاس جائیں یہاں پر ہم کس کس کو چیک کریں گے ۔

مزید : علاقائی


loading...