پشاور،آرمی چیف کی زیر صدارت خصوصی سیکیورٹی کانفرنس ،انٹیلی جنس حکام کی بریفنگ

پشاور،آرمی چیف کی زیر صدارت خصوصی سیکیورٹی کانفرنس ،انٹیلی جنس حکام کی ...

پشاور (خصو صی رپورٹ) سانحہ چارسدہ کے زخمیوں کی عیادت کے بعد آرمی چیف جنرل راحیل شریف کی زیر صدرات کور ہیڈ کوارٹرز پشاور میں خصوصی سیکورٹی کانفرنس ہوئی۔ کانفرنس میں سیکورٹی صورتحال سمیت اہم امور پر بات چیت ہوئی۔ کانفرنس میں انٹیلی جنس حکام بھی شریک ہو ئے، آرمی چیف کو سیکیورٹی صورتحال پر بریفنگ د ی گئی۔ اس سے پہلے آرمی چیف دہشتگردی کا نشانہ بننے والی باچا خان یونیورسٹی پہنچے اور آپریشن میں شریک پاک فوج کے جوانوں اور سکیورٹی اہلکاروں سے ملاقات کی۔ جنرل راحیل شریف نے قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے حملے کے بعد سکیورٹی فورسز کے فوری رد عمل کو بھی سراہا۔ آرمی چیف چارسدہ ہسپتال بھی گئے جہاں زخمیوں کی عیادت کی اور انہیں ہر ممکن طبی سہولیات فراہم کرنے کی ہدایات دیں۔

ڈیوس؍ راولپنڈی (آئی این پی) وزیراعظم نواز شریف نے ڈیووس سے آرمی چیف جنرل راحیل شریف کو ٹیلیفون کیا،گفتگو میں دہشت گردی کے خلاف جنگ پوری قوت کے ساتھ جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا اور فیصلہ کیاگیا کہ دہشتگردی کے خلاف جنگ کواس کے منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا ، وزیراعظم نے باچا خان یونیورسٹی پردہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے سیکیورٹی فورسز کی بروقت اور دلیرانہ کارروائی کو سراہا اور کہا کہ دہشت گردی کے ملک سے مکمل خاتمے تک دہشتگردوں کے خلاف جنگ جاری رہے گی اور آپریشن ضرب عضب کو اس کے منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق بدھ کو وزیراعظم نواز شریف نے ڈیوس سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل راحیل شریف کو ٹیلی فون کیا اور ان سے باچا خان یونیورسٹی پر دہشت گرد حملے اور واقعے سے نمٹنے کیلئے سیکیورٹی فورسز کے آپریشن سمیت دیگر اہم امور پر بات چیت کی، اس دوران نواز شریف نے دہشت گرد حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردوں کی اس قسم کی بزدلانہ کارروائیاں دہشت گردی کے خلاف ہمارے عزم کومتزلزل نہیں کر سکتیں، دہشت گردی کے خلاف پوری قوم متحد ہے اور دہشت گردی کے مکمل خاتمے تک دہشت گردوں کے خلاف جنگ جاری رہے گی۔ انہوں نے کہاکہ دہشت گردوں کے خلاف آپریشن ضرب عضب بھرپور قوت کے ساتھ جاری ہے اور اسے پوری قوم کی حمایت حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب اپنے منطقی انجام تک جاری رہے گا ۔ اس دوران آرمی چیف نے چارسدہ حملے اور اس کے نتیجے میں ہونے والے جانی نقصان اور سیکیورٹی فورسز کے آپریشن بارے وزیراعظم کو بریف کیا جبکہ وزیراعظم نے بروقت کارروائی کرنے پر سیکیورٹی فورسز کی تعریف کی اور کہا کہ اس دلیرانہ کارروائی سے ملک کسی اور بڑے سانحے سے بچ گیا۔ ٹیلیفونک گفتگو کے دوران دہشت گردی کے خلاف جنگ پوری قوت کے ساتھ جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا اور فیصلہ کیا گیا کہ اس جنگ کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔

مزید : صفحہ اول