حملے میں شہید پروفیسر ڈاکٹر حامد حسین کا تعلق صوابی سے تھا

حملے میں شہید پروفیسر ڈاکٹر حامد حسین کا تعلق صوابی سے تھا

صوابی( بیورورپورٹ) باچا خان یونیورسٹی چار سدہ میں دہشت گرد حملے میں شہید ہونے والے نوجوان پروفیسر ڈاکٹر حامد حسین ولد لعل بہادر کا تعلق صوابی سٹی کے محلہ شیر داد خیل سے تھا۔وہ 1982میں صوابی کے معروف خاندان کے سر براہ لعل بہادر کے ہاں پیدا ہوئے تھے۔ ابتدائی تعلیم گورنمنٹ ہائی سکول صوابی سے حاصل کی ۔ گریجویشن گورنمنٹ ڈگری کالج صوابی سے کیا اور بعد ازاں ایم ایس سی سیدو شریف کالج سے کرنے کے بعد انگلینڈ سے کیمسٹری میں پی ایچ ڈی کر لی۔وہ کچھ عرصہ نجی تعلیمی اداروں میں بحیثیت کیمسٹری ٹیچر خدمات انجام دیتے رہے اس کے بعد پبلک سروس کمیشن کے ذریعے اسسٹنٹ پروفیسر تعینات ہو گئے۔جنوری 2013میں باچا خان یونیورسٹی چارسدہ میں بحیثیت پروفیسر تعینات ہو گئے اور پورے تین سال بعد اسی ادارے میں جام شہادت نوش کیا ۔ شہید پروفیسر ڈاکٹر حامد حسین نے اپنے پیچھے تین سالہ بیٹا حاشر حسین اور ایک سالہ بچی حریم حسین کے علاوہ بیوہ ، والد لعل بہادر ، دو بھائی سجاد حسین اور اشفاق حسین سوگوار چھوڑے۔ شہید کو نماز مغرب کے بعد سینکڑوں اشکبار آنکھوں کے سامنے اپنے آبائی قبر ستان صوابی میں سپرد خاک کر دیا گیا۔ جنازے میں اعلیٰ سرکاری و سول حکام ، تعلیمی اداروں کے آفسران ، عمائدین علاقہ اور دوست و احباب نے کثیر تعداد میں شرکت کی#

مزید : پشاورصفحہ اول