حافظ آباد ، واقعہ جھوٹا ثابت ہونے پرپولیس نے چاروں ملزم فارغ کردیئے

حافظ آباد ، واقعہ جھوٹا ثابت ہونے پرپولیس نے چاروں ملزم فارغ کردیئے

حافظ آباد(ڈسٹرکٹ رپورٹر) حافظ آباد کے نواحی گاؤں وچھوکی میں محنت کش کے دونوں ہاتھ کاٹے جانے کا واقعہ جھوٹا ثابت ہونے پر کسوکی پولیس نے چاروں ملزمان کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے فارغ کردیا۔ تفصیلات کے مطابق تقریبا تین ہفتے قبل محنت کش محمد اکرم کی جانب سے یہ الزام عائد کیا گیا تھا کہ وچھوکی کے زمیندار نے اسکے دونوں ہاتھ کاٹ دےئے ہیں ۔جس پر کسوکی پولیس نے فوری طور پر چار ملزمان اسد اسرار ، احسان الحق، محمد طارق اور خاور حسن کے خلاف مقدمہ درج کرکے انہیں گرفتار کرلیا تھا۔ بعد ازاں ر وزیر اعلی نے حافظ آباد خود پہنچ کر اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ جس پر اعلی سطح پر ہاتھ کاٹے جانے کے اس واقعہ کی غیر جانبدارانہ صاف اور شفاف انکوائری کروائی گئی۔ آرپی او سرگودھا ذوالفقار حمید کی سربراہی کی تشکیل دی گئی تین رکنی کمیٹی نے تمام حقائق و واقعات کی روشنی میں اس واقعہ کو جھوٹا اور من گھڑت قرار دیا۔ جس کے بعد کسوکی پولیس نے مذکورہ مقدمہ کے چاروں ملزمان کو بے گناہ قرار دیتے ہوئے انہیں فارغ کردیا۔دوران انکوائری یہ بات سامنے آئی کہ محنت کش کے دونوں ہاتھ حادثاتی طور پر چارہ کاٹنے والی مشین میں آئے تھے ۔بعد ازاں اس نے زمیندار کو بلیک میل کرنے کے لئے یہ الزام لگا دیا۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ مقامی خفیہ ایجنسیوں نے اس واقعہ کو پہلے ہی روز من گھڑت اور جھوٹا قرار دے دیا تھا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر