ملک بھر میں بارش پہاڑوں پر برفباری کئی علاقے دھند کی لپیٹ میں سردی بڑھ گئی

ملک بھر میں بارش پہاڑوں پر برفباری کئی علاقے دھند کی لپیٹ میں سردی بڑھ گئی

لاہور،کراچی،مظفرآباد، پشاور،کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ا یجنسیاں) لاہور سمیت ملک بھر میں سردی کی شدید لہر برقرار ہے اکثر مقامات پر بارش ،پہاڑوں پر برفباری جبکہ کئی علاقوں میں دھند نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں،لاہور میں رات گئے بارش جس سے سردی بڑھ گئی،بجلی کا بریک ڈاؤن کئی علاقے تاریکی میں ڈوب گئے ،شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا،تفصیلات کے مطابق ایران سے بارش برسانے والا سسٹم مکران کے ساحل تک پہنچ گیا جس کے بعد کراچی سمیت سندھ کے 70 فیصد مقامات پر بارش کا امکان ہے جب کہ بلوچستان کے مختلف اضلاع میں بارش اور برفباری کا سلسلہ جاری ہے۔کراچی اور بلوچستان میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی،بارشوں،برفباری سے ضلع نیلم کی تین لاکھ سے زائد آبادی محصور،شاہراہ نیلم کے متاثر ہونے کے باوجود ابھی تک ہنگامی اقدامات نہ اٹھائے جاسکے ،بالائی نیلم میں برف باری سے شدید نقصانات کا احتمال ہے ،ادویات ،خوراک کی عدم موجودگی اور شاہرات کی مسلسل بندش سے عوام شدید پریشان ہیں ،خاکم بدھن ریاست اپنی اجتماعی ذمہ داریوں سے پہلو تہی کر رہی ہے ،ارباب اختیار ٹھوس حکمت عملی اختیار کریں ،آزادکشمیر سمیت مظفرآباد کے مختلف علاقوں میں بارش اور برفباری کے باعث رابطہ سڑکیں منقطع ،نوسیری ڈیم کو جانے والی مین شاہراہ بھی بارش اور ناقص میٹریل کے باعث بیٹھنی شروع ہوگئی،جس سے وادی نیلم اور مظفرآباد کا زمینی رابطہ بند ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے عوام کی مشکلات میں اضافہ،نہ پانی نہ بجلی ہر15منٹ کے بعد دو گھنٹے کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ برقرار ،ٹیلیفونک رابطے بھی منقطع ہوکر رہ گئے،اشیاء خوردونوش اور ادویات نہ ہونے کے باعث عوام بیمار ہونے لگی۔تفصیلات کے مطابق آزادکشمیر سمیت مظفرآباد کے مختلف علاقوں میں گزشتہ دنوں سے جاری بارشوں اور برفباری کے باعث مختلف علاقوں کا دارلحکومت مظفرآبا د سے زمینی رابطہ منقطع ہوکر رہ گیا ہے ،قلات میں طویل خشک سالی کے بعد ژالہ باری ،بارش اور،برفباری،کوہ ہربوئی سمیت دیگرپہاڑوں نے سفیدچادراوڑھ لی،عوام اورزمینداروں میں خوشی کی لہردوڑگئی،شہریوں نے سیلفیاں لے کراس لمحے کویادگاربنایا، سوات کے میدانی علاقوں میں وقفے وقفے سے بارش جبکہ کالام ،مہوڈنڈ ،گبین جبہ ،سخرہ ،مٹہ سپین سر ،میاندم اور مالم جبہ میں برف باری کا سلسلہ تیسرے روز بھی جاری ،جاری بارش اور برف باری سے موسم انتہائی سرد ہوگیا ،صوبائی وزیر داخلہ اور پی ڈی ایم اے میر ضیاء اللہ لانگو نے بلوچستان میں بارشوں کے باعث پی ڈی ایم اے کو الرٹ رہنے کی ہدایات جاری کر دیں جس پر تما م آفیسران اور عملے کی چھٹیاں منسوخ کر کے پی ڈی ایم اے کا کنٹرول روم تمام اضلاع سے مکمل رابطے میں ہے ،ڈیرہ مرادجمالی سمیت گردونواح کے علاقوں میں وقفے وقفے سے بارش جاری نشیبی علاقے زیر آب ڈیرہ مرادجمالی میں ناقص سیورئیج سسٹم کے باعث بارشوں کا پانی گھروں محلوں گلیوں میں جمع آمد ورفت میں شدید مشکلات جبکہ بارشوں کے ہونے سے سردی کی شدت میں بھی بے پناہ اضافہ لوگ اپنے گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے سکردو سمیت بلتستان ڈویژن کے بالائی علاقوں میں برف باری ، پورے علاقے نے برف کی سفید چادر اوڑھ لی، شہروں میں نظام زندگی مفلوج ، جبکہ بالائی علاقوں کے لوگ گھروں میں محصور ہو گئے۔ سکردو میں ہونے والی برف بار کے باعث اب تک تقریباً 6 انچ برف پڑ چکی ہے ۔ شہری علاقوں میں معمولات زندگی مفلوج ہوگئے ہیں بازار اور تجارتی مراکز سنسان ہیں جبکہ سڑکوں پر پھسلن کی وجہ سے ٹریفک کی روانی متاثر ہے۔ بلتستان کے 95 فی صد بالائی دیہاتوں کا سکردو سے زمینی رابطہ منقطع ہے،محکمہ موسمیات نے آج اور کل ملک بھر کے کئی اضلاع میں بارش اور پہاڑوں پر برفباری کی نوید سنا دی ، محکمہ موسمیات کے مطابق کوئٹہ، قلات، سبی، مکران ڈویڑن، مالاکنڈ، ہزارہ، مردان، ڈی آئی خان، ڈی جی خان، راولپنڈی ڈویڑن،اسلام آباد، کشمیر اورگلگت بلتستان میں آج اکثر مقامات پرگرج چمک کے ساتھ بارش اور پہاڑوں پر برفباری ، پشاور،کوہاٹ، بنوں، سرگودھا، گوجرانوالہ، ملتان، ڑوب، شہید بینظیر آباد، سکھر، لاڑکانہ ڈویڑن میں کہیں کہیں بارش کا امکان ہے۔

مزید : صفحہ اول