چارسدہ، آل سب انجینئر ز کی قلم چھوڑ ہڑتال تیسرے روز میں داخل

  چارسدہ، آل سب انجینئر ز کی قلم چھوڑ ہڑتال تیسرے روز میں داخل

  



چارسدہ(بیورو رپورٹ) آل سب انجنیئر ایسوسی ایشن کا مطالبات کی منظوری کے لئے قلم چھوڑ ہڑتال تین روز سے جاری ہے جس سے ضلع میں ترقیاتی منصوبوں پر تعمیراتی کام ٹھپ ہو کررہ گیا ہے۔ ضلع بھر کے سب انجنئیر ز نے حکومت سے فوری طور پر سروس سٹرکچر کی بحالی سمیت اپ گریڈیشن اور ٹیکنیکل الاونس کی منظوری کا مطالبہ کیا۔ اس حوالے سے چارسدہ پریس کلب کے سامنے آل سب انجنیئر ایسوسی ایشن کی جانب سے مطالبات کے حق میں مظاہرہ کیا گیا جس محکمہ ایری گیشن،پبلک ہیلتھ،ٹی ایم اے،لوکل گورنمنٹ اور اسی اینڈ ڈبلیو سمیت دیگر سرکاری محکموں میں تعینات سب انجنیئرز نے شرکت کی۔اس موقع پر مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے شجاعت علی خان،ثناء اللہ،ارشد علی،جمشید،اکبر علی،محمد نثار اور ریاض خان نے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ قیام پاکستان سے لیکر اب تک ہر دور حکومت نے سب انجنئیرز کے بنیادی مسائل اور ان کے جائز حقوق دینے پر کوئی توجہ نہیں دی ہے جس کی وجہ سے تاحال صوبے کے تمام سب انجنئیر ز بغیر سروس سٹرکچر کے سارے عمر کام کرتے ہیں جو کہ نہ صرف غیر آئینی بلکہ غیر انسانی بھی ہے۔ اس حوالے سے انہوں نے حکومت سے فوری طور پر سروس سٹرکچر،اپ گریڈیشن اور ٹیکنیکل الاونس کی منظوری کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پچھلے سال ہم نے بنی گالہ میں اپنے حقوق کے لئے مظاہرہ کیا تھا جس پر صوبائی حکومت نے ہمیں ون ٹائم پروموشن دیا تھا جس سے صوبے کے ہزارو ں سب انجنیئرز میں سے چند انجنئیرز کو پروموٹ کیا گیا لیکن ہزاروں کی تعدا د میں سب انجنئیرز کو اپنے بنیادی حقوق دینے کا وعدہ کیا گیا جو تاحال وفا نہ ہو سکا۔اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر حکومت کی جانب سے ہمارے مطالبات کو فوری طور پر منظور نہ کیا گیا تو پورے صوبے میں قلم چھوڑ ہڑتال کو مزید توسیع دی جائے گی اور صوبے بھر میں ترقیاتی منصوبو ں پر جاری تعمیراتی کاموں کو بند کیا جائے گاجبکہ اپنے حقوق کے خصول کے لئے دوبارہ بنی گالا کا رخ کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر