بلدیاتی انتخابات کا معاملہ، الیکشن کمیشن اوردیگرکو نوٹس جاری

      بلدیاتی انتخابات کا معاملہ، الیکشن کمیشن اوردیگرکو نوٹس جاری

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے کراچی میں فوری بلدیاتی انتخابات کروانے کے لیے دائر آئینی درخواست پر الیکشن کمیشن و دیگر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 7فروری کوجواب طلب کرلیاہے۔پیرکو سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس محمد علی مظہر کی سربراہی میں محمود اختر نقوی کی کراچی میں بلدیاتی الیکشن فوری کرائے جانے سے متعلق آئینی درخواست کی سماعت ہوئی۔سندھ ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں کہا گیا ہے کہ پورے صوبے میں بلدیاتی سسٹم اپنی مدت پوری کرچکا ہے،شہر کا میئر، ڈپٹی میئر، کونسلر،چیئر مین و دیگر غیر آئینی و غیر قانوی طریقے سے کام کر رہے ہیں،لوکل گورنمنٹ فوری انتخابات کے لیے الیکشن کمیشن کو درخواست دے اور الیکشن کمیشن 4 ماہ کے اندر انتخابات منعقد کروائے۔لوکل گورنمنٹ جان بوجھ کر سندھ میں بلدیاتی انتخابات نہیں کروا رہیہیں،حکومت سندھ کے وزرا میڈیا پر کہہ رہے ہیں کہ انتخابات 30 اگست 2020 کو منعقد کروائیں جائیں گے،بلدیاتی انتخابات نہ ہونے کی وجہ سے عوام کے بنیادی مسائل میں دن بہ دن اضافہ ہو رہا ہے۔بلدیاتی نمائندے اپنی مدت مکمل کرچکے ہیں، تمام نمائندے بشمول میئر، ڈپٹی میئراوردیگر کو کام کرنے سے روکا جائے،بلدیاتی اداروں میں ایڈمنسٹریٹر مقرر کرنے کا حکم دیا جائے۔عدالت نے دائر درخواست پر الیکشن کمیشن، صوبائی الیکشن کمیشن،حکومت سندھ اور سیکریٹری بلدیات سمیت دیگر کونوٹس جاری کرتے ہوئے تمام فریقین سے 7 فروری تک جواب طلب کرلیا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر