کراچی، میری ٹائم ونٹر اسکول 2020 کا باقاعدہ آغاز

کراچی، میری ٹائم ونٹر اسکول 2020 کا باقاعدہ آغاز

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاکستان شروع دن سے اپنے بحری ذخائر سے فائدہ اٹھانے سے قاصر رہا ہے، حالانکہ پاکستان کو قدرت نے سمندر کی شکل میں انمول خزانے سے مالامال کیا ہے۔پاکستان دنیا بھر میں سمندری تزویراتی محل وقوع کے لحاظ سے 76واں سب سے زیادہ فوقیت دیے جانے والا ملک ہے۔ اس کے باوجود ہمارے تعلیمی ادارے، مقننہ اور حکومتیں سمندر کی افادیت سے نا آشنا رہے ہیں۔ اس اہم قومی مسئلے کی جانب متوجہ کرنے کے لئے میری ٹائم اسٹڈی فورم نے نیشنل سینیٹر برائے میری ٹائم ریسرچ اور پالیسی کے اشتراک سے پانچ روزہ میری ٹائم ونٹر اسکول 2020 کا بحریہ یونیورسٹی کراچی میں انعقاد کیا ہے۔میری ٹائم ونٹر اسکول 2020 کا بنیادی مقصد رسرچرز اور اسکالرز کی توجہ میری ٹائم سیکٹر کی جانب مبذول کرانا ہے تاکہ یہ نوجوان طلباء سمندر کی اہمیت اور افادیت سے آگاہ ہوسکیں اور اپنے اپنے ریسرچ کے میدان میں پاکستان کو درپیش وہ مسائل جن کا تعلق سمندری تجارت، سیاحت،موسمیاتی تبدیلی،نباتات اور تزویراتی معاملات سے ہے، ان پر روشنی ڈال سکیں اور ہمارے قانون ساز اداروں اور حکومتوں کو فیصلہ سازی میں معاونت کر سکیں۔اس ورکشاپ کے پہلے دن ڈائیریکٹر این سی ایم پی آر کموڈور (ر) علی عباس، رئیر ایڈمرل مختار خان جدون، ڈاکٹر انیل سلمان، ڈاکٹر سید محمد انور، سلمان جاوید اور نوفل شاہ رخ نے شرکاء کو اس اسکول کی افادیت کے بارے میں روشناس کروایا۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر