40لاکھ ٹن گندم کا ذخیرہ موجود ہے تو درآمد کرنے کا جواز نہیں،اسماعیل راہو

      40لاکھ ٹن گندم کا ذخیرہ موجود ہے تو درآمد کرنے کا جواز نہیں،اسماعیل راہو

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ کے وزیرزراعت محمد اسماعیل راہو نے کہاہے کہ جب وفاق نے کہا تھا کہ ان کے پاس 40 لاکھ ٹن گندم کا ذخیرہ موجود ہے تو درآمد کرنے کا جواز نہیں بنتاتھا،وفاقی حکومت کاباہر سے گندم منگوانے کا فیصلہ سمجھ سے بالاترہے۔پیر کو جاری بیان میں اسماعیل راہو نے کہا کہ اگر یہ فیصلہ درست ہے تو کیا وفاقی حکومت نے جو کہا وہ غلط تھا۔ وفاقی حکومت قوم کو بتائے کہ ان کا کون سا فیصلہ صحیح تھا اور کون سا غلط،جب گندم برآمد کرنی تھی تو کہا گیا وافر مقدار میں ذخائر موجود ہیں اگرتین لاکھ ٹن گندم باہر سے منگوانی تھی تو 40 ہزار ٹن گندم افغانستان بھیجی کیوں گئی۔ در آمدی گندم مارچ سے پہلے ملک نہیں پہنچ سکتی۔مارچ تک سندھ میں گندم کی نئی فصل آجائے گی۔ وفاقی حکومت کے اس فیصلے پر آبادگاراور کاشتکار تنظیموں کو تحفظات ہیں۔انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت صوبے میں سستے آٹے کے اسٹال لگاکر فراہمی شروع کردی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پرکراچی، حیدرآباد، ٹھٹھہ، لاڑکانہ اور سکھر میں فلورملز کے باہر اسٹال لگائے گئے ہیں۔اسماعیل راہو نے کہا کراچی کے 25 کے قریب بچت بازاروں میں سستے آٹے کے اسٹال لگائے گئے ہیں۔کراچی کے شہری بچت بازاروں میں جاکر اسٹالوں سے دس کلو آٹے کا تھیلہ 430 روپے میں خرید سکتے ہیں۔ فلور ملزکے باہربھی آٹے کے ٹرک کھڑے کردیے ہیں۔مہنگا آٹا فروخت کرنے والوں کے خلاف صوبے بھر میں کارروائیاں کی جارہی ہیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر