یوسف عباس کی ضمانت کیس میں مزید دستاویزات کو ریکارڈ کا حصہ بنانیکی اجازت

  یوسف عباس کی ضمانت کیس میں مزید دستاویزات کو ریکارڈ کا حصہ بنانیکی اجازت

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے چودھری شوگر مل منی لانڈرنگ میں گرفتار نواز شریف کے بھتیجے یوسف عباس کی ضمانت کے کیس میں مزید دستاویزات کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی اجازت دے دی۔اس سلسلے میں یوسف عباس نے اپنے وکیل امجد پرویز کی وساطت سے دائر متفرق درخواست دائر کی تھی جو عدالت نے منظور کرلی،درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ چودھری شوگر ملز کیس میں مریم نواز کی درخواست ضمانت پر نیب کے جواب کو ریکارڈ کا حصہ بنانے کی اجازت دی جائے، یوسف عباس نے اپنی درخواست میں موقف اختیار کررکھاہے کہ نیب نے 19 جولائی 2019 ء کو درخواست گزار کوکال اپ نوٹس بھیجا جس کا مکمل جواب دیاگیا،8 اگست کو میاں نواز شریف سے کوٹ لکھپت جیل ملنے گیا تو نیب نے گرفتار کر لیا، نیب کی حراست میں 48 دن جسمانی ریمانڈ پر رہا لیکن کوئی شواہد عدالت میں پیش نہیں کئے گئے،نیب نے 410 ملین کی رقم کا الزام لگایا جبکہ اس کا تمام ریکارڈ موجود ہے، تمام رقم بینکنگ چینل سے پاکستان آئی اور اس پر ٹیکس بھی دیا، نیب نے بے بنیاد الزامات لگائے، درخواست ضمانت بعد از گرفتاری منظور کی جائے۔

یوسف عباس

مزید : صفحہ آخر