تفتیشی افسروں کو مساوی طور پر مقدمات تقسیم نہ کرنے پر سی پی او ملتان ناراض

  تفتیشی افسروں کو مساوی طور پر مقدمات تقسیم نہ کرنے پر سی پی او ملتان ناراض

  



ملتان (وقائع نگار)سٹی پولیس آفیسر نے ملتان کے تھانوں میں تعینات تھانیداروں کو مختلف مقدمات کی مثلوں کی منصفانہ تقسیم نہ ہونے پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔جسکی وجہ سے مقدمات کو یکسو کرنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ذرائع (بقیہ نمبر45صفحہ7پر)

سے معلوم ہوا ہے سی پی او ملتان محمد زبیر دریشک نے تفتیشی افسران کو مساوی طور پر مقدمات تقسیم نہ کرنے کا علم میں آیا ہے۔جس پر انہوں نے غصے کا اظہار کیا ہے۔منصفانہ تقسیم نہ ہونے سے کئی تفتیشی افسران کے پاس حد سے زیادہ مثلیں موجود ہوتی ہیں۔اور انکو یکسو کروانے میں دقت کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ذرائع مطابق گزشتہ سال 2019بکے سنگین نوعیت کے مقدمات کے اعداد وشمار کا اگر اندازہ لگایا جائے تو اوسط ایک تفتیشی افسر کے آپس مجموعی طور پر چھ مقدمات ہونے چاہیے تھے۔ جوکہ ایسا نہیں ہو رہا ہے۔لہذا سی پی او نے ضلع بھر کے ایس پیز اور ڈی ایس پیز کو حکم دیا ہے کہ وہ اپنے سرکل اور ڈویثرن میں یکساں مقدمات کی تقسیم کے عمل کو یقینی بنائیں۔ازسرنو اپنے مذکورہ معاملات کا جائزہ لیا جائے۔اس حوالیسے ایک پرفارمہ بھی جاری کیا گیا ہے۔جس میں نمبر شمار۔تھانے کا نام۔پندرہ دن کے اندر اندراج مقدمات۔تفتشی افسران کا نام۔اور کتنے مقدمات کو تھانیدار کے حوالے کیا گیا ہے۔واضح رہے ہر پندرہ روز کی بعد ایک مفصل ڈائری بھی سی پی او آفس کو ارسال کی جائے گی۔جسکی روشنی میں اہم امور زیر بحث لائے جائیں گے۔

ناراض

مزید : ملتان صفحہ آخر