ہرطرف آٹا، آٹا، ارکان اسمبلی، افسروں کا بحران سے انکار، دکانوں پر رش، لائنیں مانیٹرنگ،دورے رزلٹ زیرو

ہرطرف آٹا، آٹا، ارکان اسمبلی، افسروں کا بحران سے انکار، دکانوں پر رش، ...

  



ملتان‘ چوک شہید‘ مظفر گڑھ‘ وہاڑی‘ صادق آباد‘ بہاولپور‘ رحیم یار خان‘ لیہ‘ ترنڈہ محمد پناہ‘ لیاقت پور (سپیشل رپورٹر‘ بیورو رپورٹ‘ نمائندگان پاکستان) ڈپٹی کمشنر ملتان عامر خٹک نے ضلع کی رجسٹرڈ چکیوں کے لیے سرکاری گندم کا یومیہ کوٹہ 3 بوری سے بڑھا کر 5 بوری کرنے کی ہدایت کی ہے اور چکیوں کو محکمہ خوراک کے شہر میں قائم کئے گئے سٹور سے گندم فراہم کرنے کا حکم دیا ہے تاکہ شہریوں کو چکی سے مقررہ نرخوں پر آٹے کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے۔وہ(بقیہ نمبر14صفحہ12پر)

سرکٹ ہاؤس میں اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات و ثقافت پنجاب ندیم قریشی اور ممبر صوبائی اسمبلی بیرسٹر وسیم خان بادوزئی نے اجلاس میں خصوصی طور پرشرکت کی۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل قمرالزمان قیصرانی،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیوطیب خان،ڈپٹی ڈائریکٹرفوڈ اکرام لوٹھڑ،اسسٹنٹ کمشنرزعابدہ فرید،شہزاد محبوب، غلام سرور،احمد رضا اور ڈی ایف سی محمد ممتاز احمد بھی اجلاس میں موجودتھے۔اجلاس میں تاجر رہنما عارف فصیح اللہ،صدر چکی ایسوسی ایشن طیب خان اور ضلع کے 70 رجسٹرڈ چکی مالکان نے شرکت کی۔ڈپٹی کمشنر نے خطاب کرتے ہوئے کہا ملتان کی چکیوں کو جلالپور پیروالا سے گندم کی فراہمی ناانصافی ہے۔اس طرح ان کے انکے اخراجات میں اضافہ ہو جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ کوٹہ بڑھانے کا مقصد عوام کو مقررہ نرخوں پر آٹے کی فراہمی یقینی بنانا ہے۔چکی مالکان 41 روپے فی کلو کے حساب سے شہریوں کو آٹا فراہم کرنے کے پابند ہونگے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہاکہ چکیوں سے آٹے کی فراہمی کو مانیٹر کیا جائے گا۔دس یوم بعد دوبارہ چکی مالکان کے ساتھ اجلاس ہو گا۔اگر چکی مالکان نے تعاون کیا تو گندم کا کوٹہ مزید بڑھا دیا جائے گا۔عامر خٹک نے توقع کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ چکیوں کا کوٹہ بڑھانے کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔انہوں نے محکمہ خوراک کے افسران کو ہدایت کی کہ چکی مالکان اگر کسی فلور مل کو گندم فروخت کریں تو سخت کارروائی کی جائے۔ڈپٹی کمشنر نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شہر میں آٹے کے سیلز پوائنٹس میں اضافہ کردیا گیا ہے اوراب 80 سے زائد سیلز پوائنٹس پر آٹا دستیاب ہو گا۔پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات وثقافت پنجاب ندیم قریشی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صوبے میں آٹے کا کوئی بحران نہیں ہے، یہ صرف سازش ہے۔انہوں نے کہا کہ فلور ملز اور چکی مالکان جائز منافع کمائیں۔چکیوں کا کوٹہ پہلے نہیں تھا، موجودہ حکومت نے مقرر کیا ہے۔ ندیم قریشی نے کہا کہ پنجاب میں گندم کی کوئی کمی نہیں ہے۔چکی مالکان گلی محلے میں بیٹھے ہیں، یہ آٹے کی قلت کا پراپیگنڈہ ناکام بنائیں گے۔صوبہ پنجاب میں پورے ملک کو اناج فراہم کرنیکی صلاحیت ہے۔انہوں نے کہا کہ ملتان شہر سے گندم کی فراہمی سے چکی مالکان کے مال برداری کے اخراجات کم ہونگے۔ممبر صوبائی اسمبلی بیرسٹروسیم خان بادوزئی نے کہا کہ ناجائز منافع کمانے کے لیے صوبے میں آٹے کا مصنوعی بحران پیدا کیا گیا ہے۔صوبہ میں گندم اور آٹے کی کوئی کمی نہیں ہے۔ضلعی انتظامیہ ملتان نے آٹے کی دستیابی بارے کامیاب منصوبہ بندی کی ہے اور شہریوں کو سیلز پوائنٹس پر آٹا مقررہ نرخوں پر دستیاب ہے۔انہوں نے کہا کہ چکیوں سے پرچون میں کلو یا دو کلو آٹا خریدنے والوں کی ریٹ بارے شکایات سامنے آرہی تھیں۔اب چکی مالکان کا کوٹہ بڑھانے سے یہ ایشو بھی حل کر لیا گیا ہے۔ سابق سینئر وائس چیئر مین ضلع کو نسل وہاڑی عاصم سعید خان منیس سابق صوبائی وزیر آصف سعید خان منیس کی محمد ناصر خان کھچی محسن جٹھول کے ہمراہ صحا فیوں سے گفتگو تفصیل کے مطا بق سابق سینئر وائس چیئر مین ضلع کو نسل وہاڑی عاصم سعید خان منیس سابق صوبائی وزیر آصف سعید خان منیس نے ایکس وائس چیئر مین محمد ناصر خان کھچی چوہدری محسن جٹھول کے ہمراہ صحا فیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مو جودہ حکو مت کی معاشی حکمت عملی بالکل فیل ہو گئی ہے مہنگائی کے ساتھ ساتھ آٹے کے بحران نے غریب عوام کی چیخیں نکال دی ہیں غریب عوام بڑھتی ہوئی مہنگائی کی چکی میں پسنے پر مجبور ہیں لوگ بھوک کی وجہ سے اپنے بچوں سمیت خود کشی کرنے پر مجبور ہیں انہوں نے کہا کہ اناڑی منتخب نمائندوں نے ملکی معیشت کا بیڑہ غرق کر دیا ہے مو جودہ حکو مت بڑھتی ہوئی مہنگائی اور آٹے کے بحران کو فل فور کنٹرول کرے اگر اس صورت حال کوکنٹرول نہ کیا گیا تو بد ترین صورت حال پیدا ہو جائے گی۔ ڈپٹی کمشنر انجینئر امجد شعیب خان ترین نے کہا ہے کہ ضلع مظفرگڑھ میں آٹے کا کوئی بحران نہیں ہے اور وافر مقدار میں اور سرکاری ریٹ پر آٹا مارکیٹ میں دستیاب ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ضلع کے کسی علاقے میں عوام کو آٹے کی دستیابی اور آٹے کی قیمت کے حوالے سے کوئی شکایت ہو تو وہ براہ راست ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو اور ڈپٹی کمشنر سے رابطہ کریں. انہوں نے کہا کہ آٹے کے حوالے سے گرانفروشی اور مصنوعی قلت پیدا کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی. انہوں نے کہا کہ ضلع کے ایک 160 پوائنٹس پر آٹا سرکاری ریٹ پر دستیاب ہے چاروں تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز نے ان مقامات پر اہلکار تعینات کردئے ہیں جو آٹے کی بروقت سپلائی اور سرکاری نرخوں پر فراہمی کو یقینی بنارہے ہیں. ہر پوائنٹ کی مانیٹرنگ کی جارہی ہے اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو کو اس سلسلے میں فوکل پرسن بنایا گیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج مظفرگڑھ شہر میں آٹے کے مختلف پوائنٹس کا دورہ کرتے ہوئے کیا. ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر فرخ شہزاد اور دیگر اعلیٰ حکام بھی ان کے ہمراہ تھے اس موقع پر ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ نے کہا کہ ضلع بھر کی 21 فلور ملز سے روزانہ 20 کلو آٹے کے 11600 بیگز مارکیٹ میں سپلائی کئے جارہے ہیں۔ پیپلز پارٹی کے کارکنوں نے آٹے کے بحران اور مہنگائی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اس موقع پر پیپلز پارٹی کے ضلعی رہنما محمد حسین لنگاہ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا حکومت نے عوام سے دو وقت کی روٹی چھین لی ہے مہنگائی کی وجہ سے پہلے ہی عوام کی چیخیں نکل رہی

تھیں اب آٹے کے بحران نے عوام کا جینا حرام کردیا ہے یہ حکومت کی نااہلی ہے کہ پاکستان ایک زرعی ملک ہے اور آٹے کا بحران پیدا ہوگیا ہیانہوں نے کہا پیپلز پارٹی عنقریب حکومت کیخلاف تحریک شروع کرنے جارہی ہے جو حکومت کے خاتمے تک جاری رہے گی انشاء اللہ 2020تبدیلی اور الیکشن کا سال ہے ہم چاہتے ہیں کہ حکومت خود جنرل الیکشن اناونس کردے اگر الیکشن اناونس نہ ہوئے تو خود بخود اناونس ہوجائیں گے کیونکہ حکومت کے اتحادی حکومتی چیخیں نکلتی دیکھ رہے ہیں ایم کیو ایم کی حکومت سے علیحدگی اس کی ایک مثال ہے انہوں نے کہا نیب اپوزیشن جماعتوں کیخلاف انتقامی کاروائی کیلئے استعمال کی جارہی ہے حکومتی ارکان کو کلین چٹ دی جارہی ہے زلفی بخاری اسکی مثال ہے اس موقع پر پیپلز پارٹی کے کارکنوں مشتاق احمد بھٹی مختار احمد ودیگر بھی موجود تھے۔ آٹا بحران وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پرضلعی انتظامیہ کی جانب سے مختلف علاقوں میں آٹا سیل پوائنٹ قائم کردیئے گئے ہر آٹا سیل پوائنٹ کی نگرانی فوڈانسپکٹر کریگا جبکہ تحصیل بھر میں مانیٹرنگ اسسٹنٹ کمشنر کریگا آٹا بحران کے باعث عوامی شکایات پر گزشتہ روز ضلعی انتظامیہ کی جانب سے تحصیل صادق آباد کے مختلف علاقوں میں آٹا سیل پوائنٹ قائم کیئے گئے ہیں صادق آباد کے دیگر علاقوں کی طرح احمدپورلمہ میں بھی آٹا سیل پوائنٹ قائم کر دیا گیا جس کی نگرانی فوڈ انسپکٹر چوہدری فیصل الرحمن نے کی جس دوران اسسٹنٹ صادق آباد عامرافتخار نے وزٹ کیا اور آٹا خریدار سمیت شہریوں سے مسائل معلوم کیئے وزٹ کے موقع پر اسسٹنٹ کمشنر عامرافتخار نے کہا کہ مصنوعی مہنگائی کرنے والوں اور ذخیرہ اندوزوں کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے کاروباری حضرات اور دوکاندار ریٹ لیسٹ کے مطابق کھانے پینے کی اشیاء فروخت کریں اور شہری حضرات بھی ناجائز منافع خوروں کی نشاندہی کرکے انتظامیہ کا ساتھ دیں فوری ایکشن لیا جائیگا۔ نائب امیر صوبہ جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اخترنے کہاہے کہ زرعی ملک میں آٹے کے بحران نے حکمرانوں کی لاعلمی اور نااہلی کا پول کھول دیاہے۔ڈیڑھ سال میں ہر چیز اوپر گئی، اگر کوئی چیز نیچے آئی ہے تو وہ آمدن ہے۔ موجودہ حکومت کی نحوست کی وجہ سے ملک سے خیر و برکت اٹھ گئی ہے۔ مہنگائی، بے روزگاری اور مایوسی کے اندھیروں نے ملک کو چاروں طرف سے گھیر لیاہے۔ اناج میں کمی، آٹا سمیت خوراک کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے نے غریب کی کمر توڑ دی ہے۔آٹے کے بحران اور مہنگائی نے مزدور کو بستر مرگ پر پہنچا دیاہے۔ موجودہ حکومت نے پندرہ ماہ میں عوام پر مہنگائی کے کوڑے برسائے ہیں۔ حکومت نے مہنگائی پر قابو پانے کی کوشش نہ کی تو عوام اسے زیادہ دیر برداشت نہیں کریں گے۔ ایڈ یشنل ڈپٹی کمشنر وہاڑی محمد فاروق ڈوگر نے آٹے کی فراہمی اور قیمتوں کی چیکنگ کے حوالے سے بوریوالا کا دورہ کیا انہوں نے میونسپل کارپشن بوریوالا اور مختلف دکانوں میں مقررہ کردہ نرخوں پر آٹے کی فراہمی کو چیک کیا اور آٹے کی فراہمی کی صورتحال پر اطمینان کا اظہار کیا ایڈ یشنل ڈپٹی کمشنر وہاڑی محمد فاروق ڈوگر نے اس موقع پر کہا کہ وزیر اعلی پنجاب کی ہدایت پر ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں کے خلاف شکنجہ سخت کیا جا رہا ہے عوام تک مقرر کردہ نرخوں پر آٹے کی فراہمی کو یقینی بنا یا جا رہا ہے جو بھی ذخیرہ اندوزی اور گراں فروشی کو مرتکب پایا گیا اس کے خلاف سخت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ حکومت پنجاب کے احکامات پر عوام کو آٹے کی مقرر کردہ نرخوں پر دستیابی یقینی بنانے کیلئے ڈپٹی کمشنر علی شہزادمارکیٹ پہنچ گئے،مختلف مارکیٹ، دکانوں، آٹا چکیوں، تندورو ہوٹلز کا دورہ،مہنگا آٹا فروخت کرنے پر 2دکاندار گرفتار، ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر ضلع میں آٹا کی سپلائی اور ڈیمانڈ کا جائزہ لینے کے لئے مختلف مارکیٹس کا وزٹ کیا۔انہوں نے انتظامیہ کی جانب سے قائم سستے آٹا کے پوائنتس پر آٹا کی دستیابی، معیار اور مقدار کا جائزہ لیا جبکہ خریداری کے لئے آئے شہریوں سے بھی آٹا کی دستیابی و معیار بارے معلومات حاصل کیں۔ڈپٹی کمشنر نے شہریوں کی شکایات پر ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر کو آٹا کی کوالٹی مزید بہتر کرنے کی ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ خوراک کا عملہ ضلع بھر میں سرکاری گندم کی پسائی کرنے والی فلور ملز میں گندم کی سپلائی، آٹا کی پسائی، معیار اور مقدار کی نہ صرف کڑی مانیٹرنگ کریں بلکہ تمام مراحل کا مکمل ریکارڈ رکھا جائے۔انہوں نے ہدایت کی کہ تمام فلور ملز کا سرپرائز وزٹ کرتے ہوئے مارکیٹ میں سپلائی کئے جانے والے آٹا کی سیمپل لیکر لیبارٹری بھجوائے جائیں۔آٹا کے معیار و مقدار پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا، ناقص آٹا فراہم کرنے والی فلور ملز مالکان کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔انہوں نے ڈی ایف سی کو ہدایت کی کہ فکسڈ و موبائل پوائنٹس پر آٹا کی قلت نہیں ہونی چاہیے۔ڈپٹی کمشنر نے مختلف دکانوں اور آٹا چکیوں پر دستیاب آٹا کے نرخ اور کوالٹی کا جائزہ لیا جبکہ مہنگے داموں آٹا فروخت کرنے پر دو دکاندار کو موقع سے گرفتار کروا دیا۔ چیف ایگزیکٹو تحریک بحالی صوبہ بہاولپورمحمدنوازناجی نے کہاہے کہ ملک بھرمیں آٹے کابحران سنگین شکل اختیار کرگیاہے اوریہ سب کیادھراحکومتی نواتنوں کاہے پنجاب میں آٹے کابحران نہ ہونے کی بات کرنیوالے عوام کودھوکہ دے رہے ہیں ملتان، خانیوال، ترنڈہ محمدپناہ، وہاڑی، حاصل پور، ڈاہرنوالہ، ڈیرہ غازیخان میں صورتحال سنگین ہوچکی ہے جبکہ دیگرشہروں میں بھی دکانوں پرآٹانایاب ہے نئے پاکستان کے خالق حکمرانوں کے ڈیڑھ سالہ دورمیں ہرچیزبلندکی طرف محوپرواز ہے اب ملک میں چینی کابحران بھی سراٹھانے لگاہے اورچینی کی قیمت میں روزانہ کے حساب سے اضافہ دیکھنے میں آرہاہے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں ہوشرباراضافہ نے عوام کی کمرتوڑ کررکھ دی ہے یوٹیلیٹی سٹوروں پربھی آٹاناپیدہے مہنگائی کاایک طوفان ہے جوتھمنے کانام ہی نہیں لے رہا۔ نوازناجی نے کہاکہ ملک کوبحرانوں نکالنے کیلئے تمام سٹیک ہولڈرز کومل بیٹھناہوگا حکومت مہنگائی اورذخیرہ اندوز مافیاکے سامنے بے بس ہے اس میں ان بحرانوں کوحل کرنے اورعوام کوسکھ کاسانس دینے کی صلاحیت ہی موجودنہیں یہ ملکی تاریخ کی ناکام ترین حکومت ثابت ہوتی ہے کاشتکاروں کوسہولیات میسرنہیں کھاد، بجلی مہنگی کردی گئی ہیں۔ آٹے کی مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔ذخیرہ اندوزوں اور ناجائزمنافع خوروں کیخلاف کریک ڈاون کریں۔ ضلع میں آٹے کی کوئی قلت نہیں ایس اوپی کے مطابق فلور ملوں کی مانیٹرنگ کی جائے۔یہ بات ڈپٹی کمشنر اظفر ضیاء نے فیئرپرائس شاپس آٹافراہمی وچکی مالکان کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اجلاس میں اے سی لیہ نیاز احمدمغل، ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولرپرویز قریشی اور ڈی او انڈسٹری محمدعبداللہ نے شرکت کی۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ20 کلو آٹے کا تھیلہ 805روپے میں اور ضلع میں 250دکانوں میں 29 فیئر پرائس شاپ پر بھی آٹا دستیاب ہے جبکہ ضلع کی 200آٹا چکیوں پر کھلاآٹا 55روپے کلو میں فر وخت ہوگاچکی مالکان واضح جگہ پر ریٹ لسٹ آویزاں کرنے کے پابندہوں گے۔ڈپٹی کمشنرنے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انتظامی افسران فیلڈ میں نکلیں اور آٹے کی طلب اور رسد کی کڑی نگرانی کرتے ہوئے سرکاری نرخوں پر آٹے کی فراہمی کو یقینی بنانے وعوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے ہر ممکن اقدامات اُٹھائیں۔ ترنڈہ محمد پناہ اور گردو نواح میں حکومت پنجاب کی ہدایت پر سبسڈی پر عوام کو سستے داموں آٹا فراہم کرنے والے مل مالکان کی غیر معیاری آٹا کی سیل پوائنٹس پر فراہمی جاری شہریوں فرید احمد رانا دلشاد،کلیم اللہ تبسم،عابد علی،محمد زاہد نے بتایا کہ حکومت کیطرف سے سبسڈی آٹا انتہائی غیر معیاری اور کھانے کے قابل نہیں اول تو روٹی بنتی نہیں بن جائے تو کھانے کے قابل نہیں مجبورا ًخریدا آٹا جانوروں کو کھلانا پڑتا ہے اس سلسلہ میں آٹا سیل پوائنٹ ڈیلرز کا کہنا ہے کہ مل مالکان جو آٹا فراہم کرتے ہیں وہ ہم فروخت کر رہے ہیں آٹا غیر معیاری ہونے کے سبب سیل میں نمایاں کمی ہوئی ہے جبکہ شہر اور گرد ونواح میں فائن اسپیشل آٹا 20 کلو کا تھیلا 1200 تک فروخت ہورہا ہے شہریوں نے ڈی سی اور ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر سے سستا آٹا سیل پوائنٹس پر معیاری آٹا فراہمی یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ اسسٹنٹ کمشنر محمد ارشد وٹو نے فوڈ انسپکٹر رئیس شاہد محمود کے ہمراہ تحصیل بھر کے خرایداری مراکز گندم کا دورہ کرکے گوداموں میں موجود گندم کی کوالٹی اور اور مقدار کو چیک کیا اس موقعہ پر انہوں نے بتایا کہ تحصیل بھر میں اس وقت ایک کروڑ پچاس لاکھ کے قریب پچاس کلوگندم کے بیگز موجود ہیں جن کو حکومتی پالیس کے تحت مارکیٹ میں لایا جائے گا تاہم اس وقت اس کی ضرورت پیش نہیں آئی انہوں نے بتایا کہ تحصیل بھر میں آٹا کا کوئی بحران نہیں ہر جگہ آٹا وافر مقدار میں موجود ہے اور کسی جگہ بھی آٹا یا دیگر اشیاء خورد و نوش کی کمی نہیں انہوں نے مزید بتایا کہ ناجائز منافع خوروں اور مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے گرد گھیرا تنگ کیا ہوا ہے بعد میں انہوں نے آٹا سیل پوائنٹ کی کارکردگی کا جائزہ لے کر اطمینان کا اظہار کیا ۔

آٹا بحران

مزید : ملتان صفحہ آخر