سندھ کے شہریو ں کو آٹے کی فرا ہمی یقینی بنا ئی جا ئے،سعید غنی

سندھ کے شہریو ں کو آٹے کی فرا ہمی یقینی بنا ئی جا ئے،سعید غنی

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ کے وزیر اطلاعات و محنت سعید غنی نے کہا ہے کہ ملک میں آٹے کے بحران سے لوگ پریشان ہیں وفاقی وزراء نے غیرذمہ داری کا مظاہرہ کیا اور سندھ حکومت کو اسکاذمہ دارٹہرایا جب کہ حقیقت یہ ہے کہ سندھ نے چارلاکھ ٹن گندم کی تر سیل کر نی تھی جو کہ ایک لاکھ ٹن ملی بقیہ تین لاکھ ٹن دیگرصوبوں سے لینی تھی جب کہ دس دن تک ٹرانسپورٹرزکی ہڑتال رہی تاہم اب گندم پہنچنا شروع ہوگئی ہے اورسوالاکھ بیگ پہنچ چکے ہیں ان شاء اللہ جلد سندھ سے آ ٹے کابحران ختم ہو جا ئیگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ پنجاب میں آٹے کا بحران بدانتظامی اورنالائقی کی وجہ سے ہوئی وہاں کے پی میں گندم فیڈ ملز کو دی گئی لگتاہے انسانوں سے زیادہ مرغیاں اہم ہے سندھ میں اگرہم ذمہ دارہیں تو باقی کیا ہوا اور کو ن ذمہ دا ر ہے استعفیٰ دیں سعید غنی نے کہا کہ ایک جانب سے نومبردسمبرمیں روٹی زیادہ کھانے جیسابیان دیا گیا لگتا ہے ان مہینوں میں وہ خود زیادہ کھاتے ہونگے آٹا بحران بدانتظامی سے پیداہواہے ہمارے صدرمملکت کو آٹے کے بحران کا پتہ ہی نہیں ہے صدرمملکت کا کام اسپتالوں کے دورے کرنا نہیں بلکہ عوام کے دکھ درد کو سمجھنا ہے انہوں نے کہا کہ کراچی کے بڑے اسپتال ہم نے بہتربنائے ہیں جس کے با عث دوسرے صوبوں کے لوگ بھی یہاں علاج کرواتے آئے ہیں وفاق کے کچھ افسران نے اسپتالوں کا دورہ بھی کیا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی سلیکٹڈ حکومت سوچے سمجھے منصوبے کے تحت سندھ حکومت کیلئے مشکلات پیدا کر رہی ہے اور سندھ کے معاملات میں وفاق کی بے جا مداخلت اس کی سیاسی بوکھلاہٹ کا نتیجہ ہے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ آئی جی سندھ کے مسئلے پر کوئی ڈیڈ لاک نہیں ہے آج یاکل تک فیصلہ ہوجائیگا آئی جی سے متعلق ہمارے خدشات درست ثابت ہورہے ہیں ان کے لئے پی ٹی آئی کے کچھ لوگوں کا چیخنا اور چلاّنا سمجھ آرہا ہے اب تو کلیم امام کے کیریئرپر سوالیہ نشان ہے دیکھیں اب کون ساصوبہ ان کو اپنے صوبے میں تقرری کر یگا۔ انہوں نے کہا کہ جس وزیرنے کابینہ اجلاس میں پولیس افسران کے خلاف شکایت کی اس کے خلاف من گھڑت رپورٹس بنائی گئی پنجاب میں پی ٹی آئی حکومت نے آتے ہی بلدیاتی نظام ختم کردیاایڈمنسٹریٹرزکے ذریعے بلدیاتی ادارے چلائے جارہے ہیں سندھ میں تو بلدیاتی نظام موجود ہے توکس منہ سے سندھ پرتنقید جارہی ہے۔انہو ں نے مزید کہا کہ ایم کیو ایم اور پی ٹی آئی کی دو ستی زیا دہ دیر تک چلنے والی نہیں ہے

مزید : صفحہ اول