ادھیڑ عمر خاتون نے اپنے نواسے کو جنم دیدیا

ادھیڑ عمر خاتون نے اپنے نواسے کو جنم دیدیا
ادھیڑ عمر خاتون نے اپنے نواسے کو جنم دیدیا

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا میں ایک 54سالہ خاتون اپنے بیٹی کے بچے کو جنم دے کر ملک کی عمر رسیدہ ترین ’سروگیٹ‘ (کسی اور کا بچہ اپنی کوکھ سے پیدا کرنے والی متبادل ماں) بن گئی۔ میل آن لائن کے مطابق اس خاتون کا نام میری آرنلڈ ہے جس کی 28سالہ بیٹی میاگن وائٹ بچے دانی کے بغیر پیدا ہوئی تھی۔ لہٰذا وہ کبھی ماں نہیں بن سکتی تھی جس پر میری آرنلڈ نے اپنی بیٹی کی مدد کرنے کا فیصلہ کیا۔

میاگن اور اس کے شوہر کے بیضے اور سپرمز کے ذریعے ڈاکٹروں نے لیبارٹری میں ایمبریو پیدا کیا اور آپریشن کے ذریعے میری آرنلڈ کے جسم میں رکھ دیا۔میری آرنلڈ نے اپنے اس نواسے کو اپنے پیٹ میں رکھ کر پرورش کی اور گزشتہ دنوں اس کے ہاں اس بچے کی پیدائش ہوگئی۔ سرجری کے ذریعے پیدا ہونے والا یہ بچہ مکمل صحت مند ہے۔ 

میری آرنلڈ کا کہنا ہے کہ ”میری بیٹی نے ایک کینیڈین سروگیٹ کے ذریعے ایک بیٹی پیدا کی تھی جو بدقسمتی سے پانچ ماہ کی عمر میں ہی انتقال کر گئی۔ اس کے بعد میری بیٹی بہت افسردہ رہنے لگی تھی کیونکہ اسے لگنے لگا تھا کہ اب اس کا ماں بننے کا خواب کبھی پورا نہیں ہو گا۔ اس پر میں نے اپنی بیٹی کی اس پریشانی کو دور کرنے اور اس کے بچے کو جنم دینے کا فیصلہ کیا۔ڈاکٹروں نے مجھے میری عمر کے سبب متنبہ کیا لیکن میں ہر حال میں اپنی بیٹی کی مدد کرنا چاہتی تھی۔ اب میں اپنے نواسے کو جنم دے کر آسٹریلیا کی عمر رسیدہ ترین سروگیٹ کا اعزاز بھی اپنے نام کر چکی ہوں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -