' دنیا والوں کے طعنوں پر والد نے گھر سے نکال دیا تھا، پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹرسارہ کی دکھ بھری کہانی

' دنیا والوں کے طعنوں پر والد نے گھر سے نکال دیا تھا، پاکستان کی پہلی خواجہ ...
' دنیا والوں کے طعنوں پر والد نے گھر سے نکال دیا تھا، پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹرسارہ کی دکھ بھری کہانی

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹر سارہ گِل نے گھر اور معاشرے کی ناانصافیوں پر ہمت نہ ہاری، ہرچیلنج کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور ڈاکٹر بن کر خود کو منوایا۔

پاکستان کی پہلی خواجہ سرا ڈاکٹر سارہ گل سب کےلیے مثال بن گئیں۔ جیونیوز سے گفتگو میں سارہ نے بتایا کہ پڑھنے کا شوق بچپن سے ہی تھا لیکن دنیا والوں کے طعنوں پر والد نے گھر سے نکال دیا تھا۔ان کا کہنا تھا کہ اس کڑے سفر میں والدہ نے بہت سپورٹ کیا ۔ ڈاکٹر سارہ نے مزید کہا کہ مجھے میڈیکل کالج کے سٹاف اور ساتھی طلباء کی جانب سے بھی بہت زیادہ سپورٹ ملی ،ان لوگوں نے مجھے کبھی محسوس نہیں ہونے دیا کہ میں خواجہ سرا ہوں۔گزشتہ دنوں سارہ گل نےکراچی کے جناح میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالج (جے ایم ڈی سی ) سے ایم بی بی ایس کی ڈگری حاصل کی تھی۔وہ ایم بی بی ایس کرنے والی پاکستان کی پہلی خواجہ سرا بن گئی ہیں۔

مزید :

قومی -