ملازمین دوماہ سے تنخواہوں کے منتظر، سٹیل ملزنے اپنی بھٹیاں ٹھنڈی ہونے سے بچانے کیلئے خود بجلی کی پیدوار شروع کردی

ملازمین دوماہ سے تنخواہوں کے منتظر، سٹیل ملزنے اپنی بھٹیاں ٹھنڈی ہونے سے ...
ملازمین دوماہ سے تنخواہوں کے منتظر، سٹیل ملزنے اپنی بھٹیاں ٹھنڈی ہونے سے بچانے کیلئے خود بجلی کی پیدوار شروع کردی

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان سٹیل ملز نے اپنی بھٹیاں ٹھنڈی ہونے سے بچانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر 28 سے 30 میگاواٹ کی بجلی کی پیداوار شروع کر دی ہے، ملازمین گذشتہ دو ماہ سے اپنی تنخواہوں کے منتظر ہیں۔ مقامی میڈیا کے مطابق پاکستان سٹیل ملزنے اپنی بھٹیوں کو رواں رکھنے کیلئے اپنے گیس پلانٹ کے ذریعے 28 سے 30 میگاواٹ کی بجلی کی پیداوار شروع کردی ہے تاکہ یومیہ 7کروڑ کے نقصان سے بچا جاسکے۔یہ اقدام سٹیل ملز کے منتظم اعلیٰ سعادت چیمہ کے زیر صدارت اجلاس میں کیا گیا۔سٹیل مل کے سی ای آو نے کے ای ایس سی کو بجلی کی فوری فراہمی کیلئے مراسلہ بھیجا ہے جس میں کے ای ایس سی کے واجبات کی ادائیگیوں کیلئے تجاویز بھی دی گئی ہیں۔بد ترین مالی مشکلات سے دوچار پاکستان سٹیل ملز، کے ای ایس سی کی جانب سے بجلی کاٹے جانے کے بعد گزشتہ دو روز سے بند پڑی ہے اورملازمین گزشتہ دو ماہ سے اپنی تنخواہ کے منتظر ہیں۔کھربوں روپے کے اثاثے رکھنے والا ادارہ دہ ماہ سے ملازمین کی تنخواہ تک نہیں دے پا رہا ،2001 سے 2008 تک مسلسل منافع دینے والا ادارہ مالی سال 09-2008 میں اچانک 26 ارب روپے کا نقصان دکھا گیااور روایت چلی آرہی ہے۔حالات اتنے بد تر ہوگئے کہ ادارہ گزشتہ دوماہ سے ملازمین کی تنخواہ تک نہیں دے پایا۔فولاد سے مضبوط پاکستان بنانے کا عزم رکھنے والا ادارہ پاکستان سٹیل اور اس کے ملازمین حکومت کی توجہ کے منتظر ہیں۔

مزید : کراچی /اہم خبریں