سیاسی اور فوجی قیادت پاکستان کا ہر فورم پر دفاع کرے گی،فردوس عاشق اعوان

      سیاسی اور فوجی قیادت پاکستان کا ہر فورم پر دفاع کرے گی،فردوس عاشق اعوان

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) معاون خصوصی اطلات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ دورہ امریکا کے دوران وزیر اعظم عمران خان خطے میں پاکستان کے کردار سے متعلق دنیا کو آگاہ کرینگے،یہ پہلی دفعہ ہے کہ سول ملٹری لیڈرشپ ایک پیج پر ہے۔ دونوں مل کر پاکستان کے مفادات کا تحفظ کرنا چاہتے ہیں، وہ دن چلے گئے جب اپنے قومی سلامتی کے اداروں کے خلاف سازشیں کرنے کے لئے قوم کا سرمایہ خرچ کیا جاتا تھا، دونوں قیادتیں پاکستان کا ہر فورم پر دفاع کرینگی۔ اس سے بہتر مقدمہ کوئی اور لڑ نہیں سکتا۔ یہ ایک تاریخی دور ہے سب متفق ہیں کہ پاکستان کا مفاد سب سے پہلے ہے، سیاسی بلوغت سے ہاری ٹولہ عوام میں بے سروپا باتیں پھیلا رہا ہے،جھوٹ بولنا ان کی جماعت کا وطیرہ رہا ہے،، ویڈیو کے حوالے سے فرانزک کے ڈی جی سے متعلق جھوٹی خبریں چلاوائی گئی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہم اس کی مذمت کرتے ہیں، ویڈیو کا معاملہ سپریم کورٹ میں ہے اور اس سے متعلق ایف آئی اے اپنی رپورٹ جمع کرائی گئی، قبائلی اضلاع میں پر امن اانتخابات کے ذریعے  پاکستان سے یکجہتی کا ثبوت دیا گیا۔ پہلی بار صوبائی اور مرکزی حکومت کے انتخابات مکمل غیر جانبدار ہو رہے ہیں۔ قبائلی علاقوں میں امن کا وژن وزیر اعظم عمران خان نے دیا،وزیر اعظم نے سادگی کی مثال قائم کرتے ہوئے کمرشل فلا ئٹ کے ذریعے امریکا کا سفر کیا جبکہ اس سے پہلے حکمران سارے خاندان سمیت 777 جہازوں کے ذریعے امریکا جاتے تھے، عمران خان امریکا میں پاکستان کا مقدمہ لڑیں گے، یہ ماضی کے حکمرانوں کی طرح جیب سے پرچیاں نکال کر نہیں پڑھیں گے، بھارت میں ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کے خلاف منفی کردار ادا کیا،ہم چین کے شکر گزار ہیں جس نے سفارتی محاذ پر پاکستان کا ساتھ دیا۔وزیر اعظم کے معاون خصوصی اطلات و نشریات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ سیاسی بلوغت سے ہاری ٹولہ عوام میں بے سروپا باتیں پھیلا رہا ہے۔ مریم نواز کا عوام کو دھوکہ دینا اور جھوٹ بولنا ان کی جماعت کا وطیرہ رہا ہے۔جس نے کہا تھا کہ میری ملک اور بیرون ملک کوئی جائیدادیں نہیں۔ آپ کا خاندان 40 صندوقوں سمیت ملک سے باہر چلا گیا تھا۔ آپ اپنے سرور کیلئے سرور پیلس میں چلے گئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ویڈیو کے حوالے سے فرانزک کے ڈی جی سے متعلق جھوٹی خبریں چلاوائی گئیں۔ پنجاب ٹرانزک لیبارٹری صرف پوسٹ مارٹم  اور انسانی اعضاء کے ٹیسٹ کرتی ہے۔ ویڈیو کے حوالے سے چلائی جانے والی خبروں میں کوئی صداقت نہیں ہم اس کی مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ احسن اقبال صرف سرحدی علاقے میں سپورٹس سٹیڈیم  میں مصروف رہے۔ منصوبے میں اربوں روپے کے اخراجات میں قواعد و ضوابط کی خلاف ورزیاں کی گئیں۔ (ن) لیگ نیب اور عدالتوں کے اختیارات بھی پاس رکھنا چاہتی ہے۔ ان کی خواہش ہے کہ ہر ادارہ ان کے تابع رہے۔ آج بھی جھوٹوں کی بیٹھک میں عوام کو گمراہ کرنے کے لئے  نئی حکمت عملی بنائی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ویڈیو کا معاملہ سپریم کورٹ میں ہے اور اس سے متعلق ایف آئی اے اپنی رپورٹ جمع کرائی گئی۔ 16 سال پرانی ویڈیو سے متعلق اصل حقائق عدالت میں پیش کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں پر امن اانتخابات کے ذریعے پاکستان سے یکجہتی کا ثبوت دیا گیا۔ پہلی بار صوبائی اور مرکزی حکومت کے انتخابات مکمل غیر جانبدار ہو رہے ہیں۔ قبائلی علاقوں میں امن کا وژن وزیر اعظم عمران خان نے دیا۔ ہمیشہ قبائلی عوام کے حق اور جمہوریت کی بات کی۔ قبائلی عوام کی انتخابی عمل میں بھرپور شرکت حکومتی پالیسی پر اعتماد کا اظہار ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم  نے سادگی کی مثال قائم کرتے ہوئے کمرشل فلا ئٹ کے ذریعے امریکا کا سفر کیا جب کہ اس سے پہلے حکمران سارے خاندان سمیت 777 جہازوں کے ذریعے امریکا جاتے تھے۔ عمران خان امریکا میں پاکستان کا مقدمہ لڑیں گے۔ یہ ماضی کے حکمرانوں کی طرح جیب سے پرچیاں نکال کر نہیں پڑھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹ وفاق کی علامت ہے۔ جسے ذاتی خواہشات کے تابع نہیں کیا جا سکتا۔ چیئرمین صادق سنجرانی سینیٹ کو آئین اور قواعدو ضوابط کے مطابق چلانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کے خلاف منفی کردار ادا کیا۔ ہم چین کے شکر گزار ہیں جس نے سفارتی محاذ پر پاکستان کا ساتھ دیا۔علاوہ ازیں سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر فردوس عاشق اعوان نے اپنے پیغام میں کہا کہ کرپشن کے سمندر میں غوطے کھانے والی ن لیگ اپنے اعمال کے بھنور میں پھنس چکی ہے۔عوام کو گمراہ کرنے کی بجائے عدالتوں میں اپنی بے گناہی کا ثبوت کیوں نہیں دے دیتے؟۔ مزیدبراں فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ایل این جی کیس میں بے ضابطگیوں کے الزامات پرنیب شاہد خاقان عباسی سے تفتیش کر رہا ہے۔معاون خصوصی برائے اطلاعات ونشریات نے کہا کہ میڈیا کو مکمل آزادی حاصل ہے تاہم میڈیا کو پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی کے قوانین اور قواعد وضوابط کے مطابق اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

فردوس عاشق اعوان

مزید :

صفحہ اول -