ضمنی انتخاب،فوج کی تعیناتی کے خلاف پی پی کی الیکشن کمیشن کو درخواست

  ضمنی انتخاب،فوج کی تعیناتی کے خلاف پی پی کی الیکشن کمیشن کو درخواست

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاکستان پیپلزپارٹی نے این اے 205کے ضمنی انتخاب میں پولنگ اسٹیشنز کے اندر فوج کی تعیناتی پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے الیکشن کمیشن میں درخواست دے دی ہے۔ پیپلزپارٹی سندھ کے صدر نثار احمد کھوڑو نے ہفتہ صوبائی الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ درخواست میں الیکشن کمیشن سے اپنے فیصلے پر نظرثانی کرنے اور پولنگ اسٹیشن کے باہر جوانوں کو تعینات رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 2018کے الیکشن میں فوج کی تعیناتی کا تجربہ انتہائی تلخ رہا ہے۔ انتخابات میں پاک فوج کو پولنگ اسٹیشنز کے اندر تعینات کرکے الیکشن کو متنازع بنادیا گیا۔ پولنگ اسٹیشنز کے اندر الیکشن کمیشن کا اسٹاف پریذائیڈنگ افسران اور ایجنٹ ہوتے ہیں۔ عسکری جوانوں کو پولنگ اسٹیشن کے اندر نہیں باہر تعینات کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ تحفظات پر مبنی درخواست صوبائی الیکشن کمیشن میں جمع کرادی ہے، جو الیکشن کمیشن کے آفیسر نے وصول کی ہے۔ نثار کھوڑو نے کہا کہ پیپلزپارٹی کے ایم پی اے علی نواز مہر کومخالف امیدوار کی حمایت کرنے پر شوکاز نوٹس جاری کیا ہے۔ پریذائیڈنگ افسران کی تعیناتی الیکشن کمیشن کا کام ہے اس حوالے سے تحریک انصاف کا اعتراض بلاجواز ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -