ڈی جی پنجاب ایمرجنسی سروس کا راولپنڈی ڈویثرن کے اضلاع کی کارکردگی کا جائزہ

ڈی جی پنجاب ایمرجنسی سروس کا راولپنڈی ڈویثرن کے اضلاع کی کارکردگی کا جائزہ

  

لاہور (کرائم رپورٹر) ڈائریکٹرجنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈاکٹر رضوان نصیر نے راولپنڈی ڈویڑن کے اضلاع،جس میں اٹک، جہلم، چکوال اور مری شامل ہیں کی کارکردگی کا جائزہ لیا۔ جائزہ میٹنگ راوالپنڈی ریسکیو اسٹیشن میں منعقد ہوئی جس میں ڈپٹی ڈائریکٹر پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ فہیم احمد قریشی، ڈپٹی ڈائریکٹر آپریشنز ایاز اسلم،ہیڈ آف کمیونٹی سیفٹی اینڈ انفارمیشن مس دیبا شہناز، ریسکیو ہیڈکوارٹرز اور راوالپنڈی ویڑن کے سنئیرافسران نے شرکت کی۔ راولپنڈی ڈویڑن کے ضلعی افسران نے ڈی جی ریسکیو پنجاب ڈاکٹر رضوان نصیر کو ایمرجنسی مینجمنٹ، آپریشنز، ایمبولینسز کی مرمت، سٹاف اور متعلقہ تحصیلوں میں ریسکیو اسٹیشنز کی تعمیر کے حوالے سے آگاہ کیا۔ضلعی افسران نے ڈی جی ریسکیو پنجاب کو بتایا کہ تحصیل کہوٹہ ضلع راولپنڈی، تحصیل دینہ و سوہاوہ ضلع جہلم، تحصیل فتح جنگ ضلع اٹک، تحصیل کلرکہارتلاگنگ چواہ سیدن شاہ اور تحصیل لاواضلع چکوال کے اسٹیشن کا تعمیری کام جلد مکمل ہو جائے گا۔ ضلعی افسرا ن راوالپنڈی نے بتایا کہ گذشتہ 6ماہ میں ریسکیو1122راولپنڈی نے 17630ایمرجنسیز پر ریسکیو سروس فراہم کی جن میں 4952ٹریفک حادثات تھے۔

ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر اٹک ڈاکٹر اشفاق نے بتایا کہ ضلعی اٹک میں 6605ایمرجنسیز پر ریسکیو سروس نے عوام الناس کو ریسکیو سروسز فراہم کیں جس میں 1063روڈ ٹریفک ایکسیڈینٹ تھے۔ ڈسٹرک ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر فیصل نے بتایا کہ ریسکیو1122چکوال نے 4351ایمرجنسیز پر ریسپانڈ کیا جس میں 825روڈ ٹریفک ایکسیڈنٹ تھے۔ ڈاکٹر عتیق ضلعی ایمرجنسی آفیسر چکوال نے میٹینگ کے شرکاء کو بتایا کہ چکوال میں ریسکیو1122نے گذشتہ 6ماہ میں 4034ایمرجنسیز پر ریسپانڈ کیا جس میں 961روڈ ٹریفک حادثات شامل تھے۔ تمام ضلعی افسران نے اپنے اپنے اضلاع کی ممستقبلکی ضروریات جس میں ایمرجنسی وہیکلز اور ہیومن ریسورس شامل ہے کی رپورٹ پیش کی۔ضلعی افسران نے بتایا کہ وہ اپنے محدود وسائل کے اندر ریسکیو سروس فراہم کر رہے ہیں اور بالخصوص پیشنٹ ٹرانسپورٹ سروس کی ایمبولینس کے ذریعے ایمرجنسیز پر ریسپانڈ کر رہی ہے۔ ہیڈ آف پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ فہیم احمد قریشی نے بتایا کہ کچھ تحصیلوں کے لیے سٹاف کی بھرتی مکمل کر لی گئی ہے جو کہ تربیتی مراحل میں ہے جبکہ باقی تحصیلوں میں بھی جلد بھرتی کرکے سٹاف کو ٹریننگ کے لیے بھیج دیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ دسمبر2020سے قبل تمام راوالپنڈی ڈویڑن کی تمام تحصیلوں میں عملہ، ایمرجنسی وہیکل اور ضروری آلات بھیج دیئے جائیں گے۔ میٹنگ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر رضوان نصیر نے تمام اضلاع کو معیاری ریسکیو سروس کی فراہمی کے لیے کی جانی والی کوششوں پر سراہا اور ریسکیو سروس کے ریگولرائزیشن کے بعد دس سال مکمل کرنے والے ریسکیورز کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ دس سال مکمل کرنے والے ریسکیورز اور آفیسر ز کو بہت جلد اگلے سکیل میں پرموٹ کرتے ہوئے نئی ذمہ داریاں تفویض کی جائیں گی۔ ڈی جی ریسکیو پنجاب نے دن بہ دن بڑھتے ہوئے روڈ ٹریفک ایکسیڈنٹ کے اضافے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ زیادہ تر روڈ ٹریفک ایکسیڈنٹ ضروری حفاظتی انتظامات، روڈ سیفٹی قوانین کو اختیار کرتے ہوئے روکے جا سکتے ہیں جن میں سب سے اہم موٹر سائیکل کی رفتار کو 50کلو میٹر کی حدمیں رکھنا، موٹر سائیکل کا انتہائی بائی لین میں چلانا، ہیلمٹ کو باقاعدہ اسٹریپ کے ساتھ باندھنا اور موٹر سائیکل چلاتے ہوئے سائیڈ مرر کا استعمال شامل ہے۔

مزید :

علاقائی -