نا اہلی کیس، الیکشن کمیشن کافیصل واوڈا کیخلاف یکطرفہ فیصلے کا عندیہ

  نا اہلی کیس، الیکشن کمیشن کافیصل واوڈا کیخلاف یکطرفہ فیصلے کا عندیہ

  

کراچی(سٹاف رپورٹر) الیکشن کمیشن نے نااہلی کیس میں فیصل واوڈا اور ان کے وکیل کی غیر حاضری پر یکطرفہ فیصلہ دینے کا عندیہ دے دیا۔ چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا کی سربراہی میں 5 رکنی بینچ نے سماعت کی جس میں وفاقی وزیر فیصل واوڈا غیر حاضر رہے جب کہ ان کی جانب سے کوئی وکیل بھی پیش نہیں ہوا۔ اس پر چیف الیکشن کمشنر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ سماعت پر فیصل واوڈا کی جانب سے کوئی پیش نہ ہوا تو یکطرفہ کارروائی کی جائے گی۔ دوران سماعت چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا کہ فیصل واوڈا کی جانب سے 2 جون کو کیس خارج کرنے کی درخواست کی گئی تھی مگر اس حوالے سے درخواست گزاروں نے کوئی جواب جمع نہیں کرایا۔ درخواست گزار نے جواب دیا کہ گزشتہ سماعت پر فیصل واوڈا کی درخواست کی کاپی نہیں دی گئی اس پر چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ آپ کو وقت دیتے ہیں، آئندہ سماعت پر جواب جمع کرائیں۔ بعدازاں چیف الیکشن کمشنر نے جواب طلب کرتے ہوئے فیصل واوڈ کی نااہلی سے متعلق درخواست کی سماعت 10 اگست تک ملتوی کردی۔

واوڈا نااہلی کیس

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم عمران خان سے وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے ملاقات کی ہے۔ اسلام آباد ہائی کورٹ اور الیکشن کمیشن میں نااہلی کیس سے متعلق تفصیلی آگاہ کیا۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم ہاؤس میں عمران خان اور وفاقی وزیر کے درمیان 45 منٹ تک تفصیلی گفتگو ہوئی۔ ملاقات میں دونوں رہنماؤں کے درمیان ملک کی مجموعی، سیاسی، معاشی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وفاقی وزیر نے کراچی کی صورت حال پر وزیر اعظم کو تفصیلی آگاہ کیا۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم نے الیکشن کمیشن اور ہائی کورٹ میں وفاقی وزیر کے خلاف دائر نااہلی کیس سے متعلق دریافت کیا جس پر فیصل واوڈا نے کیس سے متعلق تفصیلی آگاہ کیا جس پر عمران خان نے وفاقی وزیر کو ہدایت کی کہ اس معاملے پر الیکشن کمیشن اور ہائی کورٹ کی مکمل معاونت کریں۔عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف عدالتوں کا احترام کرتی ہے۔ عدالت جو بھی فیصلہ کرے گی اسے من و عن قبول کریں گے۔

فیصل واوڈا

مزید :

صفحہ اول -