مستحق افرا د کو ریلیف دینے کیلئے سبسڈی نظام کا جائز ہ لینا ضروری: وزیراعظم

        مستحق افرا د کو ریلیف دینے کیلئے سبسڈی نظام کا جائز ہ لینا ضروری: ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم عمرا ن خان نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے سبسڈی فراہم کرنے کا مقصد غریب اور مستحق افراد کی معاونت اور ریلیف کی فراہمی ہے، حکومتی سبسڈیز کا تفصیلی جائزہ لینے کے لئے خصوصی سیل قائم کیا جائے تاکہ وہ ہر شعبے میں فراہم کی جانے والی سبسڈی کا جائزہ لیکر اس میں مزید بہتری اور اسکی افادیت بڑھانے کے لئے جامع سفارشات پیش کر سکے۔تفصیلات کیمطابق وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت معیشت سے متعلقہ مختلف امور کے حوالے سے قائم تھنک ٹینک کا اجلاس ہوا۔ وفاقی وزرائحماد اظہر، سینٹر شبلی فراز، عمرایوب خان، مشیر ان ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، عبدالرزاق داؤد، ڈاکٹر عشرت حسین، معاون خصوصی ڈاکٹر ثانیہ نشتر، ندیم بابر موجود جبکہ ویڈیو لنک کے ذریعے سابق وزیرِ خزانہ شوکت ترین، سلطان علی الانہ، عارف حبیب اور اعجاز نبی نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس میں بجلی گیس، فرٹیلائزرز، یوٹیلٹی سٹورز، ایکسپورٹس، ہاؤسنگ، احساس، این ایچ اے اور دیگر سرکاری اداروں کے حوالے سے بجٹ اور بجٹ سے باہر دی جانے والی سبسڈیز پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ وزیرِ اعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے سبسڈی فراہم کرنے کا مقصد غریب اور مستحق افراد کی معاونت اور ریلیف کی فراہمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ سبسڈی کے پورے نظام کا بغور جائزہ لیا جائے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ سبسڈی کی رقم مکمل طور پرشفاف طریقے سے نہ صرف ضرورت مندوں کو میسر آئے بلکہ زیادہ سے زیادہ افراد اس سہولت سے مستفید ہوں۔ وزیرِ اعظم نے مشیر خزانہ کو ہدایت کی کہ مختلف مد میں حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی سبسڈیز کا تفصیلی جائزہ لینے کے لئے ایک خصوصی سیل قائم کیا جائے تاکہ وہ ہر شعبے میں فراہم کی جانے والی سبسڈی کا جائزہ لیکر اس میں مزید بہتری اور اسکی افادیت بڑھانے کے لئے جامع سفارشات پیش کر سکے۔ وزیرِ اعظم نے کورونا کی حالیہ صورتحال میں احساس پروگرام کی جانب سے ضرورتمندوں کو کیش ٹرانسفر کے پروگرام کی افادیت، پہنچ اور شفافیت کو سراہتے ہوئے کہا کہ معاشرے کے غریب اور ضرورت مند افراد کو بجلی،گیس، یوٹیلٹی اسٹورز و دیگر سبسڈیز کی فراہمی کے حوالے سے احساس کیش پروگرام کے ڈیٹا بیس سے بھی استفادہ کیا جائے۔دریں اثنا وزیراعظم عمران خان کی عثمان ڈار اور ملک امین اسلم سے ملاقات میں اہم فیصلے کئے گئے، وزیراعظم نے عید کے فوری بعد ”ٹائیگر فورس ڈے“منانیکا فیصلہ کیا ہے، ٹائیگرفورس رضاکار ملک بھر میں شجر کاری کی مہم میں حصہ لیں گے اور نوجوان مون سون پلانٹیشن کے دوران ایک کروڑدرخت لگائیں گے۔ اس حوالے سے وزیراعظم بدھ کونوجوانوں کیلیے خصوصی ویڈیوپیغام بھی جاری کریں گے، عمران خان نے رضا کاروں کی تعداد بڑھانے کے لیے رجسٹریشن دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا ہے، رجسٹریشن آئندہ چند روز میں ایپ کے ذریعے کھول دی جائے گی۔ وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت نالج اکانومی کے فروغ، سیرت النبی ؐ پر تحقیقی سنٹر کے قیام اور اعلیٰ تعلیم کے حوالے سے مختلف مجوزہ منصوبوں کی پیش رفت کے حوالے سے جائزہ اجلاس منعقد ہوا۔ نالج اکانومی، آرٹفیشل انٹیلی جنس، اور انڈسٹری اور یونیورسٹیوں میں بہتر کوارڈینیشن کے حوالے سے ریسرچ سنٹر کے قیام سے متعلق منصوبوں پر بات کرتے ہوئے وزیرِ اعظم نے کہا کہ جدید تعلیم کا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں پاکستان کے نوجوانوں میں بے شمار صلاحیت موجود ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ اس صلاحیت کے فروغ کے لئے موافق ماحول فراہم کیا جائے۔

وزیراعظم

مزید :

صفحہ اول -